رانا ثناءاللہ اورعبدالعلیم خان کے رابطوں کی خبریں۔۔۔ کب اور کتنی بار ملاقاتیں ہوئیں؟ رہنما تحریک انصاف نے خود ہی سچ بتا دیا

لاہور(ویب ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما عبدالعلیم خان نے میڈیا میں آنے والی اس خبر کی سختی سے تردید کی ہے کہ اُن کا مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر راناثنا ء اللہ سے ٹیلی فونک رابطہ ہوا ہے۔تفصیلات کے مطابق اپنے وضاحتی بیان میں رکن پنجاب اسمبلی عبدالعلیم خان کا کہنا تھا

کہ اُن کی رانا ثنا ء اللہ سے کسی قسم کی کوئی بات چیت نہیں ہوئی اور اس سلسلے میں شائع ہونے والی خبر مکمل طور پر من گھڑت ہے۔انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ رانا ثناء اللہ نے بھی اس طرح کا کوئی بیان نہیں دیا ہوگا۔عبدالعلیم خان نے وضاحت کرتے ہوئے مزید کہا کہ وہ تحریک انصاف کا حصہ تھے،ہیں اور انشاء اللہ ہمیشہ رہیں گے،اُنہوں نے ہر مشکل وقت میں عمران خان کا ساتھ دیا اور آئندہ بھی دیتے رہیں گے، جہاں تک انہیں کسی قسم کی ذمہ داری دیے جانے کا تعلق ہے اس کا فیصلہ بھی وزیر اعظم عمران خان نے کرنا ہے، انہیں جب جہاں ضرورت محسوس ہوئی میں حاضر ہوں۔عبدالعلیم خان نے کہا کہ انہوں نے2011میں ملک گیر تبدیلی کے لئے تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی تھی اور وہ آج بھی پورے یقین کے ساتھ یہ سمجھتے ہیں کہ وہ تبدیلی صرف اور صرف عمران خان ہی لا سکتے ہیں، اُن کی نیت پر کوئی شک نہیں کیا جا سکتا۔عبدالعلیم خان نے واضح کیا کہ اس طرح کی خبروں کے پیچھے بعض لوگوں کے مخصوص عزائم ہوتے ہیں جن کے بارے میں کچھ نہیں کہا جا سکتا۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان مسلم لیگ(ن)کے قومی اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر خواجہ محمد آصف نے کہاہے کہ حکومت احساس پروگرام، بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کو بروئے کار لائے لیکن فنڈز کی تقسیم کو سیاسی رنگ نہ دے ۔کورونا کے خلاف جنگ کے موقع پر قومی جذبے کا مظاہرہ ہونا چاہئے ، قوم کو خانوں میں نہ بانٹیں ۔نجی ٹی وی کے مطابق سپیکر کی بلائی گئی پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے خواجہ آصف نے کہاکہ حکومت احساس پروگرام،بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کو بروئے کار لائےلیکن فنڈز کی تقسیم کو سیاسی رنگ نہ دے،دوسری جانب ایک خبر کے مطابق2013 کے انتخابات میں دھاندلی نہیں ہوئی تھی، پاکستان تحریکِ انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے انکشاف کیا ہے کہ 2013 کے انتخابات میں دھاندلی نہیں ہوئی تھی، 66 فیصد حلقوں میں ہمیں 20 فیصد بھی ووٹ نہیں پڑے تھے، ہم نے ویسے ہی دھاندلی دھاندلی کا شور مچائے رکھا۔