بریکنگ نیوز:کورونا وائرس کے باعث پیدا ہونے والی صورتحال کے بعد پاکستان کو ایف اے ٹی ایف کے حوالے سے شاندار خوشخبری سنا دی گئی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان کو فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کی جانب سے منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کیلئے مالی معاونت کے خلاف 13 فول پروف انتظامات سے متعلق رپورٹ جمع کرانے میں 5 ماہ کا اضافی وقت مل گیا۔ایک سینئر سرکاری عہدیدار نے بتایا کہ ہمیں اسٹیٹ

بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے ذریعے ایف اے ٹی ایف سے حالیہ اقدام کے بارے میں اطلاع ملی کہ ان کا بیجنگ میں 21 سے 26 جون کو ہونے والا جائزہ ملتوی کردیا گیا۔انہوں نے بتایا کہ ایف اے ٹی ایف کی جانب سے اب اکتوبر میں ملک کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا۔عہدیدار نے بتایا کہ اس سے قبل پاکستان کو 20 اپریل تک کارکردگی رپورٹ پیش کرنا تھی تاہم اب ہم اگست میں اپنی رپورٹ ایف اے ٹی ایف کو بھیجیں گے جس کا اکتوبر میں جائزہ لیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ التوا بظاہر کورونا وائرس سے متعلق غیر یقینی صورتحال کی وجہ سے ہوئی ہے تاہم اس صورتحال نے پاکستان کو اپنی کمی دور کرنے کے لیے اضافی وقت مہیا کردیا۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ کی زیر صدارت ای سی سی اجلاس میں 2.5 ارب روپے کے رمضان ریلیف پیکیج کی منظوری دیدی ہے جس کے تحت یوٹیلیٹی سٹورز پر 19 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں پر سبسڈی دی جائے گی، اشیائے خوردنی 15 سے 20 فیصد سستی فراہم کی جائیں گی، اقتصادی رابطہ کمیٹی نے بجلی صارفین کو ریلیف دینے سے متعلق سمری پر فیصلہ(کل)جمعرات کے روز تک موخر کر دیا ہے، ای سی سی کل ہونے والے اجلاس میں اس پر پھر غور کرے گی۔اقتصادی رابطہ کمیٹی میں کارکے کیس میں لیگل فیس کی ادائیگی کیلئے 1.5 ملین ڈالر کی سپلیمنٹری گرانٹ کی منظوری بھی دے دے گئی ہے۔ اجلاس میں احساس پروگرام کے تحت رقوم کی ترسیل پر 30 جون تک ٹیکس چھوٹ کی منظوری بھی دی گئی ہے، ملک بھر میں ایک کروڑ بیس لاکھ افراد میں رقوم تقسیم کی جائیں گی۔اقتصادی رابطہ کمیٹی نے یوتھ بزنس لون کیلئے 84 کروڑ کی سبسڈی سمیت سپلیمنٹری گرانٹس اور خیبر پختوان خوا میں ایف سی ٹریننگ سینٹر کے قیام ایڈوانس فنڈز جاری کرنے کی منظوری بھی دے دی ہے۔