مصطفیٰ کمال نے شیشے والی ڈور استعمال کر ڈالی، مخالفوں کی سب سے خوبصورت پتنگ بو کاٹا ہو گئی، نامور خاتون سیاستدان پاک سر زمین پارٹی میں شامل

کراچی (ویب ڈیسک) ایم کیو ایم پاکستان کی خاتون رکنِ سندھ اسمبلی سمیتہ افضال نے پاک سرزمین پارٹی (پی ایس پی) میں شمولیت اختیار کرلی۔ پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران ایم کیو ایم پاکستان کی خاتون رکنِ سندھ اسمبلی سمیتہ افضال نے پاک سرزمین

پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا، سمیتہ افضال ایم کیو ایم کی جانب سے مخصوص نشست پر کامیاب ہوئی تھیں۔اس موقع پر مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ صبح چھ بجے فاروق ستار نے ایک پریس کانفرنس کی اور ایک ڈوبتے ہوئے شخص نے تنکے کا سہارا لینے کی کوشش کی، الزام لگایا گیا کہ ہم نے دباؤ ڈال کر لوگوں کو اپنے ساتھ ملانے کی کوشش کی، کیا ایم کیو ایم کے درمیان لڑائی پی ایس پی کی وجہ سے ہو رہی ہے۔ مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ جب یہ لوگ آپس میں لڑ رہے تھے ہم نے اس پر ایک لفظ نہیں بولا، چاہتے تو ان کے پرخچے اُڑا سکتے تھے تاہم اب ایم کیو ایم کے لوگ ایک ایک کرکے اسے چھوڑ کر چلے گئے۔ دوسری جانب خبر کے مطابق متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کے رکن قومی اسمبلی مزمل قریشی نے پاک سرزمین پارٹی (پی ایس پی) میں شمولیت اختیار کرلی۔ خیال رہے کہ مزمل قریشی ایم کیو ایم پاکستان پی آئی بی گروپ کے انٹرا پارٹی انتخابات میں رابطہ کمیٹی کے رکن کے طور پر بھی منتخب ہوئے تھے۔ اپنی شمولیت کا اعلان انہوں نے پاک سرزمین پارٹی کے رہنما انیس قائم خانی کے ہمراہ کراچی میں پریس کانفرنس کے دوران کیا۔

انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم میں ذاتی مفادات کی جنگ جاری ہے، مجھے امید تھی کہ جماعت میں بہتری ہوگی لیکن صرف مایوسی ہوئی جبکہ یہ لوگ شہداء کے اہل خانہ کے لیے بھی کچھ نہیں کر رہے۔ اس موقع پر انیس قائم خانی نے کہا کہ میرا دعویٰ ہے کہ پورا سندھ اور کراچی ہمارا ہے لیکن آئندہ عام انتخابات بتائیں گے کہ ہماری جماعت کتنی مضبوط ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ 2018 کے انتخابات میں پی ایس پی کامیاب ہوگی اور یا تو ہمارا وزیر اعلیٰ ہوگا یا ہماری حمایت سے صوبے کا وزیر اعلیٰ منتخب ہوگا۔ انیس قائم خانی نے کہا کہ ہم نہیں چاہتے کہ انتخابات ملتوی ہوں لیکن ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ حلقہ بندیاں درست کی جائیں۔ خیال رہے کہ اس سے قبل یکم اپریل کو ایم کیو ایم پاکستان کے حیدرآباد سے رکن اسمبلی سید وسیم نے پاک سر زمین پارٹی میں شمولیت اختیار کی تھی۔اس موقع پر انہوں نے کہا تھا کہ ایم کیو ایم میں اقتدار اور قبضے کی جنگ جاری ہے اور کسی نوعیت کا کوئی کام نہیں ہورہا اور رہنماؤں نے عوام کو مایوس کیا۔ واضح رہے کہ اس سے قبل بھی ایم کیو ایم پاکستان کے کئی اہم رہنما پی ایس پی میں شامل ہوچکے ہیں جبکہ کچھ روز قبل 2 خواتین ایم پی ایز نے بھی متحدہ قومی موومنٹ چھوڑ دی تھی۔(ف،م)