اپوزیشن بھول جائے۔۔۔!! ان ہاؤس تبدیلی کا خواب ادھورا ہے اور۔۔۔ حکومت نے ایک بار پھر تبدیلی کی راہ میں آنے والوں کو کھلا پیغام دے دیا

لاہور(ویب ڈیسک) گورنر پنجاب چودھری محمدسرور نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی اورمولانا سمیت سب 2023 تک صبرکریں ،ان ہاﺅس تبدیلی اپوزیشن کا کبھی پورا نہ ہونیوالا خواب ہے ،ہر گزرتے دن پاکستان مضبوط اور مستحکم ہو رہا ہے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق گورنر پنجاب چودھری سرور سے سابق صوبائی وزیر عبدالعلیم خان نے ملاقات

کی،ملاقات میں ملکی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا ،اس موقع پر گورنر پنجاب چودھری سرور نے کہاکہ پیپلزپارٹی اورمولانا سمیت سب 2023 تک صبرکریں ،ان ہاﺅس تبدیلی اپوزیشن کا کبھی پورا نہ ہونیوالا خواب ہے ۔ گورنر پنجاب چودھری سرور کاکہنا تھا کہ ہر گزرتے دن پاکستان مضبوط اور مستحکم ہو رہا ہے ،جی ایس پلس سٹیٹس میں توسیع ملکی معیشت کیلئے بڑا تحفہ ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے صوبہ بلوچستان کے مسائل کے حل کیلئے اراکین اسمبلی پر مشتمل 14رکنی خصوصی کمیٹی تشکیل دے دی ہے، کمیٹی بلوچستان کے مختلف اہم مسائل کی نشاندہی اور ان کا حل تجویز کرے گی. نجی ٹی وی کے مطابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کمیٹی کے چیئرمین ہونگے جب کہ دیگر ارکین میں پی ٹی آئی کے میر خان محمد جمالی، عوامی مسلم لیگ کے شیخ رشید احمد، گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کی رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر فہمیدہ مرزا، پاکستان مسلم لیگ کے چوہدری مونس الٰہی، ایم کیو ایم کے صابر حسین قائمخانی، بلوچستان عوامی پارٹی کے ا ختر مینگل اور احسان اللہ ریکی، جمہوری وطن پارٹی کے شاہ زین بگٹی، پاکستان مسلم لیگ ن کے چوہدری برجیس طاہر، پاکستان پیپلز پارٹی کے سید خورشید شاہ، متحدہ مجلس عمل کے سید محمود شاہ ، عوامی نیشنل پارٹی کے امیر حیدر اعظم خان جب کہ آزاد رکن قومی اسمبلی محمد اسلم بہتانی کمیٹی کے رکن ہونگے۔ خصوصی کمیٹی صوبہ بلوچستان کے مختلف اہم مسائل کی نشاندہی کرے گی اور ان کا حل تجویز کرے گی۔ کمیٹی کی تشکیل قومی اسمبلی کے رول244(b)کے تحت کی گئی ہے جبکہ مجوزہ تحریک قومی اسمبلی میں 26 جون 2019 کو منظور کی گئی تھی۔