کپتان سب پر بازی لے گیا ….!! پاکستان سپر پاور بننے کے قریب ، امریکیوں‌کے اوسان خطا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)پاکستان 25 سال کے بعد سپرپاور بن جائے گا۔معروف تجزیہ کار سمیع ابراہیم نے دعویٰ کیا ہے کہ اگلے 25 سال میں پاکستان سپر پاور ہوگا، ان کا کہنا ہے کہ یہ صرف میں نہیں پوری دنیا کہہ رہی ہے۔ امریکا کے معروف چارٹرڈاکاوٴٹنٹ فراینک گریہن کہتے ہیں کہ افغانستان میں امن ہو گیا اور پاکستان نے اپنی سمت درست کرلی تو

اگلے 25 سال میں پاکستان دنیا کا سپر پاور بن جائے گا۔انہوں نے مثال دیتے ہوئے کہا کہ 1776 میں کون سوچ سکتا تھا کہ 100 سال بعد امریکہ سپر پاور بن جائے گا؟ کوئی نہیں سوچ سکتا تھا کہ 30 سال کے دوران 70کروڑ لوگوں کو غربت سے نکالا جا سکتا ہے مگر یہ بھی چین نے کر د کھایا۔ امریکی تھنک ٹینک کا کہنا ہے کہ پاکستان کی نیوکلیئر پاور کی طاقت 2030 میں تیسرے نمبر پر آجائے گی۔سمیع ابراہیم کا مزیدکہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان درست سمت میں چل رہے ہیں جو تعلیم اور سیاحت کو ترجیح دے رہے ہیں۔عمران خان نے اقتدار میں آتے ہی اڑھائی کروڑ بچوں کو سکول بھیجنے کی بات کی۔ اگر یہ بچے سکول چلے گئے تو ہنر مند افراد بن کر نکلیں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ سیاحت پر بھی پاکستان بہت تیزی سے ترقی کر رہا ہے اور اس پر سرمایہ کاری کی جارہی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ دوسری افغان صدر اشرف غنی کو اپنی فکر ہے کہ اگر امریکہ چلا گیا تو میری حکومت بھی چلے جائے گی۔اسی لئے امریکہ نے طالبان پر حملہ کیا اور موقف اختیار کیا ہے کہ حملہ دفاع میں کیا گیا ہے۔ تاہم طالبان نے امریکہ پر حملے نہیں کئے افغانی آرمی کو نشانہ بنایا۔ سمیع ابراہیم نے کہا کہ بھارت اسی لئے افغانستان میں امن نہیں چاہتا کیونکہ اسے معلوم ہے کہ افغانستان میں امن آگیا تو پاکستان سپر پاور بن جائے گا ۔ ان کا کہنا ہے کہ کچھ میڈیا گروپ عمران خان کے خلاف مہم چلا رہے ہیں تاہم پاکستان کے عوام بہت سمجھدار ہیں اور سمجھ سکتے ہیں کہ پاکستان اس وقت درست سمت میں ہیں۔