عمران خان کی کوششیں رنگ لے آئیں!!!پاکستان کا نام گرے لسٹ سے باہر، عالمی ادارے موڈیز نے پاکستانیوں کو خوشخبری سُنا دی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) عالمی ریٹنگ کے ادارے موڈیز کا پاکستان سے متعلق جاری کردہ رپورٹ میں کہنا ہے کہ اسٹیٹ بینک نے اُمید ظاہر کی ہے جون 2020ء تک گرے لسٹ سے نکل جائیں گے۔ موڈیز کی جانب سے جاری کردہ نئی رپورٹ کے مطابق پاکستان کا ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ

میں رہنا بینکوں کے لیے منفی ہے، ایف اے ٹی ایف نے جون 2020ء تک پاکستان کو شرائط پوری کرنے کا وقت دیا ہے، پاکستان نے 27 میں سے 14 شرائط پوری کردی ہیں جبکہ پاکستان نے باقی 13 شرائط پر بھی پیش رفت کی ہے ۔ موڈیز کی رپورٹ کے مطابق ایف اے ٹی ایف نے پاکستان سمیت دیگر 17 ممالک پر کڑی نظر رکھی ہوئی ہے جبکہ ایف اے ٹی ایف کی پاکستانی بینکوں کی بین الاقوامی لین دین پر بھی نظر ہے۔ موڈیز کی رپورٹ کے مطابق پاکستانی بینکوں کے منافع سخت شرائط کے باعث کم ہوسکتے ہیں جبکہ کئی پاکستانی بینکوں کے خلاف کارروائی بھی ہوئی ہے ۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کارروائی اینٹی منی لانڈرنگ قوانین کی خلاف ورزی پر کی گئی اور اسی سلسلے میں دومقامی بینکوں کے بین الاقوامی لائسنس بھی ختم کیے گئے ہیں ۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) پاکستان میں انسداد منی لانڈرنگ (اے ایم ایل) اور دہشت گردی کے لیے مالی مدد کی روک تھام (سی ٹی ایف) کے حوالے سے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کی تجاویز پر عملدرآمد کیلئے آئندہ چند روز میں 3 شعبوں میں قواعد نافذ کرے گا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق یہ قواعد ریئل اسٹیٹ، جواہرات اور زیورات کے شعبوں کا احاطہ کریں گے تاکہ دہشت گردی کے لیے مالی مدد کو یہاں ٹھکانے کرنے کا امکان کم سے کم کیا جاسکے۔ اس ضمن میں لا ڈویڑن اور سیکیورٹی ایکسچینج کمیشن (ایس ای سی پی) کے ذریعے وکلا اور چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس کی نگرانی کی جائے گی۔علاوہ ازیں اس سلسلے میں ایف بی آر کے ترجمان اور پالیسی رکن ڈاکٹر حمید عتیق نے تصدیق کی کہ ہم نے قواعد جائزے کے لیے لا ڈویژن بھجوادئیے ہیں۔خیال رہے کہ پیرس سے تعلق رکھنے والی ایف اے ٹی ایف نے21 فروری کو اختتام پذیر ہونے والے اپنے پلانری اجلاس میں اے ایم ایل/سی ٹی ایف کے حوالے سے پاکستان سمیت 15 ممالک کی جانب سے کیے گئے اقدامات اور پیشرفت کا جائزہ لیا۔اجلاس میں دنیا بھر سے 206 ممالک کے نمائندے اور حکام شریک ہوئے تھے ۔