(ق) لیگ کی چاندی ہوگئی!! پنجاب میں بڑی تبدیلی آنے والی۔۔۔ پی ٹی آئی نے مطالبہ مان کرغلطی تو نہیں کردی؟ معروف صحافی حقائق سامنے لے آئے

لاہور (ویب ڈیسک) حکومت اتحادیوں کو منانے کے مشن میں کامیاب۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ عوام کو ریلیف کی فراہمی کیلیے ہر حد تک جائیں گے، تحریک انصاف اور مسلم لیگ (ق) کے درمیان مزاکرات کتنے کامیاب ہوئے اور حکومت نے چوہدری برادران کے کونسے مطالبات مان لیے، سینئر صحافی حقائق سامنے لے آئے۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سینئر صحافی اور تجزیہ کار رانا عظیم کا کہنا تھا کہ حکومت اور مسلم لیگ (ق) میں کوئی مس کمیونیکیشن نہیں تھی، بہت سے وعدے تھے جن کی وعدہ خلافی ہو رہی تھی اور جو کمٹمنٹ کی گئی تھی وہ پوری نہیں ہو رہی تھی۔ رانا عظیم نے کہا کہ 4 اضلاع ایسے تھی جن کے حوالے سے فیصلہ ہوا تھا ، یہ کمٹمنٹ کرنے والی شخصیت بہت اہم تھیں۔ ان اضلاع میں بہاولپور، چکوال، گجرات اور مندی بہاؤالدین شامل تھے۔ ان کمٹمنٹس میں طے ہونے والی باتوں میں کہا گیا تھا کہ ان علاقوں میں سرکاری افسران اور جو بھی سرکاری مشنری لگے گی اور مسلم لیگ (ق) کی مشاورت سے لگے گی۔ تمام ترقیاتی کام اور دیگر معاملات میں ان کی مشاورت شامل ہوگی، متعدد ترقیاتی اسکیمیں دیں گے۔ ان اضلاع میں الیکشن ہارنے والے تمام لوگ ان کا حصہ ہیں۔ رانا عظیم نے مزید انکشاف کیا کہ ان معاملات میں کئی رکاوٹیں آگئیں تھی ، تحریک انصاف میں بھی کئی ایسے لوگ موجود ہیں جو ایسا نہیں چاہ رہے تھے، پنجاب کے 4 اضلاع کے بعد کئی اضلاع بن جانے تھے۔ بہاولپور میں پی ٹی آئی کے افراد کا کہنا تھا کہ اس عمل سے ہماری سیاست ختم ہو جانی تھی،اور ہماری سیاسی پوزیشن خراب ہوجائے گی۔ بیوروکریسی نے بھی کہا تھا کہ ہم یہ کام نہیں کے کرچلیں گے۔ حکومت اور مسلم لیگ (ق) میں ہونے والے گزشتہ روز ملاقات میں بہت سے معاملات طے ہو چکے ہیں۔ مسلم (ق) پی ٹی آئی کو کسی صورت بھی نہیں چھوڑیں گی ہر حال میں ان کے ساتھ ہی رہے گی۔ پرویز الٰہی اور چوہدری شجاعت وضع دار شخصیات ہیں جو مطالبات حکومت سے کئے گئے ہیں وہ حکومت کو ہر صورت ماننے پڑیں گے جن پر عمل بھی جاری ہے۔