5وزراء کی شامت آگئی!! وزیراعظم کا وفاقی کابینہ کے اجلاس میں اظہار برہمی، دبنگ حکم جاری کر دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) 5وزراء کی شامت آگئی۔ وفاقی کابینہ کے اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ۔ذرائع کے مطابق کابینہ اجلاس میں وزیر اعظم خالد مقبول صدیقی کا پوچھتے رہے ۔ وزیر اعظم نے سوال کیا خالد مقبول صدیقی کہاں ہیں، ابھی تک نہیں آئے ، خالد مقبول صدیقی کو اب تو آجانا چاہئے۔

کابینہ اجلاس میں سپریم کورٹ میں ریلوے کیس کا بھی تذکرہ ہوا۔وزیر اعظم نے کہا ہمیں عدلیہ کا احترام کرنا ہے اور انہیں مطمئن کرنا ہے ۔ہم پی آئی اے کے معاملہ پر عدلیہ کو مطمئن نہیں کرسکے ۔وزیر اعظم مہنگائی ختم نہ ہونے پر معاشی ٹیم پر برہم ہوگئے اور کہا مہنگائی کنٹرول نہیں ہو رہی ، غلط بیانی کی جارہی ہے ۔معاشی ٹیم میں شامل 5وزرا مطمئن کریں کہ مہنگائی کیوں بڑھی ہے ۔ دوسری جانب وفاقی وزیر مراد سعید نے کہا ہے کہ گزشتہ حکومتوں میں حکمرانوں کی جانب سے کی گئی عیاشیوں کا پیسہ ایک ماہ میں نکلوایا جائے گا بصورت دیگر قانونی کارروائی ہو گی۔ وزیر اعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے مراد سعید کے ہمراہ کابینہ اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کابینہ اجلاس میں 18 رکنی ایجنڈے پر غور کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اتحادیوں نے آئی جی کے لیے بھیجے گئے ناموں پر تحفظات کا اظہار کیا اس لیے آئی جی سندھ کی تعیناتی کے ایجنڈے کو مؤخر کیا گیا ہے۔ مراد سعید نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان قوم کے ٹیکس کا پیسہ بچا رہے ہیں جبکہ ماضی میں قومی اداروں کو گروی رکھ کر قرضے لیے گئے۔ 10 سال میں 24 ہزار ارب روپے کا قرضہ لیا گیا اور قرضوں کے باوجود صحت، تعلیم سمیت کسی شعبے میں بہتری نہیں آئی۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں قوم کے ٹیکس کے پیسوں پر عیاشیاں کی گئیں۔ شریف خاندان کے لیے سیکیورٹی اہلکاروں کی تعداد 2 ہزار 753 تھی۔ نواز شریف کے انٹرٹیمنٹ کے اخراجات مراد سعید نے کہا کہ جاتی امرا کی فنسنگ پر 27 کروڑ روپے خرچ کیے گئے۔ بیرون ملک علاج کے لیے نواز شریف خصوصی طیارے پر گئے جبکہ وزیر اعظم عمران خان بیرونی دوروں پر بھی قومی ائر لائن یا سعودی ائر لائن استعمال کرتے ہیں۔