اللہ نے کپتان کی لاج رکھ لی!! پاکستان عالمی سرمایہ کاروں کی دلچسپی کا مرکز بن گیا۔۔۔ معروف مالیاتی ادارے نے عمران حکومت کو مفید مشورہ دے دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) معروف مالیاتی ادارے جے پی مورگن نے پاکستان میں سرمایہ کاری کی ترغیب دیتے ہوئے اپنے کلائنٹس کو پاکستان کے حکومتی بانڈز میں سرمایہ کاری کی تجویز دے دی۔ جے پی مورگن کے مطابق مثبت معاشی اشاریوں سے پاکستان عالمی سرمایہ کاروں کی دلچسپی کا مرکز بن رہا ہے۔

ادارے کے مطابق بہتر معاشی پالیسیوں سے پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ اور مالی خسارہ کم ہوا ہے۔ جے پی مورگن کے مطابق آئی ایم ایف پروگرام کی وجہ سے معاشی استحکام کو تقویت ملی ہے جبکہ بہتر معاشی پالیسیوں کی وجہ سے منڈیوں میں اعتماد بحال ہوا ہے۔ دوسری جانب امور خارجہ کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے ڈیووس میں عالمی اقتصادی فورم کے انعقاد کے موقع پر سنگاپور کے وزیراعظم جناب لی سین لوونگ نے ملاقات کی۔ دونوں وزراءاعظم نے دوطرفہ تعلقات بالخصوص تجارت وسرمایہ کاری کو مزید فروغ دینے کی خواہش کا اظہارکیا۔ عالمی اداروں کی جانب سے پاکستان کی درجہ بندی میں بہتری کا حوالہ دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے سنگاپور کی کاروباری اور سرمایہ کار برادری کو پاکستان میں سرمایہ کاری اورکاروبار شروع کرنے کے مواقع سے فائدہ اٹھانے کی دعوت دی۔ وزیراعظم نے سنگاپور کے اپنے ہم منصب کو بھارت کے زیرقبضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین صورتحال اور گزشتہ برس اگست میں بھارت کے یک طرفہ اور غیرقانونی اقدامات سے آگاہ کیا۔ دونوں اطراف نے مختلف فورمز پر تعاون کے فروغ پربھی اتفاق کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ منافع بخش کاروبار کے لئے کاروباری طبقے اور سرمایہ کاروں کو سازگار ماحول اور سہولتوں کی فراہمی موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ انہوں نے یہ بات آج اسلام آباد میں معروف کاروباری شخصیت عارف حبیب کی قیادت میں قطر کی پاکستانی نژاد اہم شخصیات کے ایک وفد سے ملاقات میں کہی۔ وزیراعظم نے کہا کہ کاروبار دوست معاشی پالیسیوں اور استحکام اور ملک میں کاروبار کرنے میں آسانی کی وجہ سے عالمی سرمایہ کار بڑی تعداد میں پاکستان کا رخ کر رہے ہیں۔عمران خان نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو قوم کا سب سے بڑا اثاثہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ کارکن معاشی استحکام کے لئے گراں قدر ترسیلات زر ملک بھیج رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان بالخصوص تعلیم یافتہ اور ہنرمند افرادی قوت کو خصوصی توجہ کی ضرورت ہے اور حکومت نے انہیں ہنرمند بنانے اور روزگار کی فراہمی کے لئے ایک اہم پروگرام شروع کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی افرادی قوت نے قطر کی ترقی اور خوشحالی میں بنیادی کردار ادا کیا ہے۔