نئے پاکستان میں ایسا نہیں چل سکتا۔۔۔!!! وسیم بادمی اور شاہ زیب خانزادہ کو نشانِ عبرت بنانے کی تیاریاں ، صحافی برادری میں تشویش کی لہردوڑگئی۔۔۔

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما جہانگیرخان ترین نے معروف ٹی وی اینکرز وسیم بادامی اور شاہزیب خانزادہ کے خلاف ہتک عزت کا دعویٰ دائر کردیا۔ نجی ٹی وی اے آروائی نیوز کے مطابق جہانگیر ترین نے موقف اختیار کیا ہے کہ وسیم بادامی اور شاہزیب خانزادہ نے ان کی ساکھ کو

نقصان پہنچانے کی کوشش کی ہے۔23جنوری کو آن ایئر ہونے والے پروگرام میں دونوں اینکرز نے ان کیخلاف جھوٹے الزامات لگائے۔ جہانگیر ترین نے دونوں اینکرز کو چودہ دنوں میں معافی مانگنے کا کہا ہے بصورت دیگر انہوں نے کہا ایک ارب روپے ہرجانے کی قانونی کارروائی ہوگی۔جہانگیر ترین کے مطابق مذکورہ پروگرام برطانیہ اور یورپ میں بھی دیکھا گیاہے اور وہ وہاں بھی ان کے خلاف قانونی کارروائی کا ارادہ رکھتے ہیں۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سینئر صحافی انصار عباسی نے دعویٰ کیاہے کہ انہوں نے 13 اکتوبر 2019 کو ایک خبر شائع کی تھی جس پر وزیراعظم عمران خان نے مجھے جیو نیوز سے نکالنے کیلئے کہا اور پیغام پہنچایا گیا کہ انصار عباسی کو نکال دیں ورنہ جیونیوز بند ہو جائے گا۔ نجی ٹی وی ” نیونیوز “ کے پروگرام میں انصار عباسی نے ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کی حال ہی میں آنے والی رپورٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ میں نے 13 اکتوبر 2019 کو ایک خبر شائع کی تھی جس کی ہیڈ لائن ” پاکستان میں کرپشن پہلے سے زیادہ بڑھ گئی ہے “ تھی ، اس خبر میں ”ورلڈاکنامک فورم “ اور ” رول آف لاء“ کی رپورٹس پر میں نے لکھا تھا کہ ” وہ ادارے کہتے ہیں کہ پاکستان میں کرپشن بڑھ گئی ہے اور ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل ان رپورٹس کو بھی غور میں لائے گی ۔“ ان کا کہناتھا کہ میں نے ماہرین سے بھی اس بارے میں رائے لی ، ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل پاکستان کو پہلے سے زیادہ کرپٹ ڈکلیئر کر سکتی ہے ۔انصار عباسی نے دعویٰ کیا کہ اس وقت وزیراعظم عمران خان ایران کے دورے پر تھے جہاں سے انہوں نے یہاں کسی کو پیغام دیا کہ ” انصار عباسی کے معاملے کو حل کریں ، پھر ہمیں کہا گیا کہ نو بجے سے پہلے انصار عباسی کو نکالیں ورنہ جیو بند ہو جائے گا ۔“انصار عباسی کا کہناتھا کہ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل پاکستان کی اس رپورٹ میں کوئی مداخلت نہیں ہوتی ،