ایک طرف بھارت میں مسلمانوں پر ظلم کی انتہا مگر حکومت پاکستان نے ہندو اقلیت کے لیے کیا شاندار اعلان کر دیا ؟ آپ بھی جانیے

لاہور(ویب ڈیسک)پنجاب حکومت نے اقلیتیوں کی فلاح و بہبود کیلئے احسن اقدام کیا، ہندوؤں اور سکھوں کی عبادت گاہوں کے لئے41 کروڑ کے فنڈز جاری کردئیے گئے۔تفصیلات کے مطابق پنجاب میں بسنے والی غیر مسلم افراد کے لئےمساوات اور رواداری کی انوکھی مثال قائم کردی، پنجاب حکومت نے ہندوؤں اور سکھوں کی عبادت گاہوں کیلئے فنڈز جاری

کر دیے،محکمہ خزانہ کی جانب سے صوبے بھر کے ہندوؤں کے مندر اور سکھوں کے گوردواروں کیلئے 41 کروڑ جاری کیے ہیں۔ننکانہ صاحب، نارووال سمیت پنجاب بھر میں ہندو اور سکھ عبادت گاہوں میں پر فنڈز خرچ کیے جائیں گے، ہندو اور سکھ عبادت گاہوں کی تعمیر و مرمت، نکاسی آب کی سکیمیں مکمل اور سٹریٹ لائٹس کی تنصیب کی جائے گی۔ذرائع کا کہناتھا کہ فنڈز کا اجرا اقلیتی اراکین اسمبلی کے حلقوں میں جاری ترقیاتی اسکیموں کی مد میں بھی جاری کیا گیا ہے ۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق لیسکو نے نجی و سرکاری نادہندہ محکموں اور اداروں سے بارہ ارب روپے کی وصولی کے لئے افسران و ملازمین کی ہفتہ وار چھٹی منسوخ کردی، ہفتہ کے روز تمام دفاتر صارفین کے لئے کھلے رہیں گے۔ لیسکو کے افسران و ملازمین کی ہفتہ وار چھٹی منسوخ کردی گئی ہے، کمپنی کے نجی و سرکاری نادہندگان سے ریکوری کے لئے چھٹی منسوخ کی گئی ہے، لیسکو نے نجی و سرکاری صارفین سے بلوں کی مد میں بارہ ارب روپے کی وصولی کرنی ہے۔ذرائع نے بتایا کہ کوارٹر ٹیرف ایڈجسٹمنٹ اور دیگر چارجز کیخلاف بڑے صارفین کی جانب سے مختلف عدالتوں سے رجوع کرنے کی وجہ سے ریکوری متاثر ہوئی ہے، جس پر سیکرٹری پاور ڈویژن عرفان علی خان کی ہدایات پر دفاتر کھلے رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ صارفین کی بلوں کی تصحیح سمیت دیگر امور کو ہفتہ کے روز حل کروا سکیں گے۔دوسری جانب ریکوری کی وجہ سے ہفتہ وار ہونے والی کھلی کچہریوں کو بھی منسوخ کر دیا گیا ہے۔