عمران خان وزیراعظم بننے سے پہلے کونسے بڑے مافیا کے لیے پوسٹر بوائے کا کام کرتے تھے؟ کپتان کا بڑا بھید کھول دیا گیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما خواجہ آصف نے وزیر اعظم عمران خان کو مافیا کے ایک گروہ کا پوسٹر بوائے قرار دے دیا۔ انہوں نے یہ بات صحافی حامد میر کے ایک ٹویٹ کا جواب دیتے ہوئے کہی۔اینکر پرسن حامد میر نے اپنے پروگرام کے حوالے سے ٹوئٹر سوال پوچھا کہ

’ عمران خان جب اپوزیشن میں تھے تو ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کا بہت حوالہ دیتے تھے اورکہتے تھے کہ میں 90 دن میں کرپشن ختم کر سکتا ہوں ان کی حکومت بننے کے ڈیڑھ سال کے بعد ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کہہ رہی ہے کہ پاکستان میں کرپشن بڑھ گئی کیا عمران خان کا بیانیہ ناکام ہو گیا؟‘حامد میر کے اس سوال کے جواب میں خواجہ آصف نے ٹویٹ کیا کہ عمران خان کا کوئی بیانیہ نہیں تھا بلکہ مافیا کے ایک گروہ نے ملک کو لوٹنے کا منصوبہ بنایا اس کے لئے ایک پوسٹر بوائے چاہیے تھا جو ان کے منصوبے کا حصہ بن جائے ۔ ملک لٹ رھا ہے بچا کھچا لٹ جائے گا جیب کٹنے کی واردات کی ایف آئی آر ہوسکتی ہے، آٹے ، چینی کے ذریعے قوم کے کھربوں لٹ گئے پوچھتا کوئی نہیں۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سپیکر پنجاب چودھری پرویزالٰہی اور ایم این اے مونس الٰہی سے امریکی سفارتکاروں کی ملاقات، سیاسی امور کے علاوہ خطے کی موجودہ صورتحال پر گفتگو کی گئی۔ سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی اورمونس الٰہی سےاعلی امریکی سفارتکاروں نےاُن کی رہائش گاہ پرملاقات کی۔ملاقات کرنے والوں میں اسلام آباد میں امریکی سفارت خانہ کے منسٹر قونصلر پولیٹیکل افیئرز مسٹر ٹیری سٹیئرز گونزالیز، امریکی قونصلیٹ لاہور کے پولیٹیکل اینڈ اکنامک چیف مسٹر بیری جنکر اور قونصل خانہ کی پولیٹیکل اینڈ اکنامک سپیشلسٹ صدف سعد شامل تھیں۔ سیاسی و اقتصادی امور سے متعلقہ ان امریکی سفارتکاروں نے موجودہ سیاسی امور کے علاوہ اقتصادی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا جبکہ باہمی دلچسپی کے دیگر امور کے علاوہ خطہ کی صورتحال بالخصوص پاک بھارت تعلقات اور افغان امور پر بھی بات ہوئی .سپیکر چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ دونوں ملکوں میں دیرینہ تعلقات کے پس منظر میں باہمی رابطے اور تجارت کے علاوہ شعبہ جاتی اور عوامی سطح پر وفود کے زیادہ سے زیادہ تبادلوں کی ضرورت ہے۔