جو مرضی کر لو،اتحادی الٹے بھی لٹک جائیں تب بھی یہ کام نہیں کرونگا ۔۔۔ عمران خان بھی اپنی ضد پر اڑ گئے

لاہور (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے مسلم لیگ (ق) کے تحفظات ، کئی وفائی وزراء اور ارکان اسمبلی کی شکایت کے باجود وزیراعلیٰ عثمان بزدار کو تبدیل نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اتحادیوں کو واضح جواب دیا ہے کہ عثمان بزدار تبدیل نہیں ہوں گے۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم عمران خان

نے فیصلہ اپنے قریبی ساتھیوں سے مشاورت کے بعد کیا ہے۔ وفاقی وزراء میں فواد چوہدری، طارق بشیر چیمہ، شفقت محمود اور دیگر نے پنجاب میں گورننس ، ترقیاتی سکیموں اور اختیارات کے حوالے سے شکایات کی تھیں۔ تاہم وزیراعظم عمران خان کو قریبی ساتھیوں نے مشورہ دیا ہے کہ عثمان بزدار اچھا کام کر رہے ہیں اس لیے اس کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیے۔ اس پر وزیر اعظم عمران خان نے دوٹوک مؤقف اخیتار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو تبدیل نہیں کیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نے وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے خلاف (ق) لیگ سمیت کئی وفاقی وزرا اور ارکان اسمبلی کی شکایات کو نظر انداز کر دیا اور اتحادیوں کو واضح جواب دیا کہ عثمان بزدار تبدیل نہیں ہوں گے۔ ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے حوالے سے شکایات کے معاملے پر وزیراعظم نے فیصلہ اپنے قریبی ساتھیوں سے مشاورت کے بعد کیا۔ ذرائع کے مطابق وفاقی وزراء نے پنجاب میں گورننس، ترقیاتی اسکیموں اور اختیارات کے حوالے سے شکایات کی تھیں اور جن لوگوں نے وزیراعظم سے شکایت کی ان میں فواد چوہدری، طارق بشیر چیمہ، شفقت محمود اور دیگر شامل ہیں۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ وزیر اعظم کو قریبی ساتھیوں نے مشورہ دیا کہ عثمان بزدار اچھا کام کر رہے ہیں اس لیے ان کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیے۔ واضح ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی بطور وزیراعلیٰ کارکردگی پر جہاں اپوزیشن جماعتیں تنقید کررہی ہیں وہیں وفاقی وزیر فواد چوہدری نے بھی ان کی کارکردگی پر سوالات اٹھائے ہیں جب کہ وفاقی وزیر نے وزیراعظم عمران خان کو ایک خط بھی لکھا۔