سندھ حکومت ناکام : صرف عمران ہی نہیں ہر کوئی کہہ رہا ہے ۔۔۔ بھٹو ازم کا پرچار کرنے والوں کی ناکامی پر مہر ثبت کرنے والی خبر

لاہور (ویب ڈیسک) ہیومن رائٹس کمشن آف پاکستان (ایچ آر سی پی) کی حالیہ رپورٹ نے سندھ حکومت کی کارکردگی کا راز کھول دیا ہے ۔ ایچ آر سی پی کی رپورٹ کے مطابق صوبہ سندھ میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ہے اور صوبے میں نااہلی بھی عروج پر ہے۔

ہیومن رائٹس کمشن رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صوبائی حکومت مضبوط جاگیردارانہ نظام میں ہاریوں کے مفادات کے تحفظ میں بری طرح ناکام ہے اور ہاریوں کے مفادات کے تحفظ کے حوالے سے کارروائی سے بھی گریز کرتی ہے۔ ہیومن رائٹس کمشن آف پاکستان کی اس رپورٹ میں جبری طور پر غائب کیے جانے والے افراد اور ان کے اہل خانہ کی جانب سے شہادتیں بھی پیش کی گئی ہیں۔ ہندو برادری کے ساتھ زیادتی کو بھی سندھ میں نمایاں کیا گیا ہے۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ سندھ میں ہندو برادری کو ملازمتوں اور رہائش میں پریشانی کا سامنا ہے جب کہ حکومت مذہب کی جبری تبدیلی روکنے میں بھی ناکام ہے جبکہ تجاوزات کے خلاف آپریشن کے دوران کراچی میں متاثر دکانداروں کا بھی تذکرہ کیا گیا ہے۔ رپورٹ میں اندرون سندھ علاج معالجے کی ناقص صورتحال پر بھی کڑی تنقید کی گئی ہے اور ساتھ ہی یہ بھی کہا گیا ہے کہ صوبہ سندھ میں آزادی اظہار اور ایسوسی ایشنز خطرے کی زد پر ہیں۔ ہیومن رائٹس کمشن آف پاکستان (ایچ آر سی پی) کی طرف سے جاری کی جانے والی رپورٹ کے مطابق سندھ میں میڈیا اور سول سوسائٹی آرگنائزیشنز پر سرکاری اداروں کا دباؤ ہے۔