کراچی میں منگیتر کیساتھ مل کر بہن کو قتل کرنے والی لڑکی کی قسمت کا فیصلہ سنا دیا گیا

کراچی (ویب ڈیسک) منگیتر کے ساتھ مل کر بہن کو قتل کرنے والی لڑکی علوینہ اور دیگر ملزمان بری ہوگئے۔5 دسمبر 2017 کو کراچی کے علاقے ملیر میں 16 سالہ علینہ کو اس کی بہن علوینہ نے منگیتر کے ساتھ مل کر قتل کیا تھا تاہم کچھ ہی دنوں میں پولیس نے ملزمان کو گرفتار

کرلیا جنہوں نے میڈیا کے سامنے قتل کا اعتراف کیا تھا۔ملزمان علوینہ، مظہر، احسن اور عباس کے خلاف سعود آباد تھانے میں مقدمہ درج کیا گیا تھا تاہم اب ماڈل کورٹ شرقی نے نوجوان لڑکی کے قتل کے مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے علوینہ اور دیگر ملزمان بری کردیا۔مقتولہ اور ملزمہ کے والد ندیم کے معاف کرنے پر عدالت نے ملزمان کو بری کیا۔یاد رہے کہ 2017 میں علوینہ نے بہن کے قتل کوڈکیتی کے دوران ہلاکت کا رنگ دینے کی کوشش کی تھی۔واقعے کے روز علوینہ نے خود کو معصوم ظاہر کرنے کے لیے اپنے سر اور بازو پر خود زخم لگائے اور اہلخانہ اور پولیس کو بتایا کہ ڈکیتی مزاحمت پر ملزمان نے علینہ کو قتل اور اسے زخمی کیا۔لواحقین نے پولیس کو دیے گئے بیان میں ہزاروں روپے مالیت کے سونے کے زیورات، نقدی اور موبائل فون جانے کا بھی ذکر کیا تھا۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق بھارت میں ایک لڑکے کو گرل فرینڈ سے شادی سے انکار مہنگا پرگیا، لڑکی نے خودکشی کی کوشش کی تو لڑکے کو اس سے آئی سی یو میں زبردستی پھیرے لینے پڑ گئے۔بھارتی شہر پونے میں نچلی ذات سے تعلق رکھنے والی ایک لڑکی نے اپنے بوائے فرینڈ کی جانب سےشادی سے انکار پر دلبرداشتہ ہو کر خود کشی کی کوشش کی مگر خوش قسمتی سے بچ گئی۔مقامی پولیس کے مطابق لڑکے کو پولیس کے بلانے پر آئی سی یو میں داخل لڑکی سے زبردستی شادی کے لیے آنا پڑا مگر شادی کے پھیرے لیتے ہی لڑکا وہاں سے فوراً فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا۔پولیس کے مطابق اس واقعے کے بعد لڑکی کی جانب سے پولیس میں لڑکے کے خلاف ایکٹ 376 کے تحت (Punish for rape) ایک ایف آئی آر درج کرائی گئی جس میں لڑکی کا کہنا تھا کہ لڑکے نے اسے زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔لڑکی کی جانب سے پولیس میں درج کرائی گئی شکایت کے مطابق لڑکے نے اسے زبردستی ناجائز تعلقات کے لیے اکسایا تھا، لڑکی کا کہنا ہے کہ میں نے سورج کو شادی کی پیشکش کی تو اس نے منع کر دیا اور کہا کہ وہ نچلی ذات سے تعلق رکھتی ہے اس لیے وہ اس سے شادی نہیں کر سکتا۔