تبدیلی نے عثمان بُزدار کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا۔۔۔!!! وزیر اعظم عمران خان کے ایک فیصلے نے پوری کابینہ کو سرپرائز دے دیا

لاہور (نیوز ڈیسک ) پنجاب کی بیورو کریسی میں چلنے والے تبادلوں کے جھکڑ میں وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے دو قریبی رشتہ دار بھی محفوظ نہ رہ سکے۔جس کے نتیجے میں چیف سیکرٹری پنجاب وزیراعلیٰ پنجاب کے گریڈ 22 کے فسٹ کزن ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب اعجاز احمد جعفر کو عہدے سے ہٹادیا ہے۔ اور ان کی

خدمات وفاق کے حوالے کردی گئی ہیں۔ اسی طرح ڈی پی او رحیم یار خان امیر تیمور جو وزیراعلیٰ پنجاب کے پھوپھا ہیں کو تبدیل کر کے ایس پی سپیشل برانچ ملتان تعینات کردیا گیا ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی حکومت ملک میں کرپشن میں خاتمے کی دعوے دار ہے لیکن انکی جماعت کے سینیئر رہنما ڈاکٹر حسن مسعود ملک نے کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس بات کا سب کو معلوم ہے کہ اس دور حکومت میں پٹواریوں کے ریٹ دگنے ہو گئے ہیں۔ڈاکٹر حسن مسعود اس وقت پاکستان تحریک انصاف شمالی پنجاب کے جنرل سیکٹری کے عہدے پر فائز ہیں ۔کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے ان ایک ویڈیو سامنے آئی ہے جس میں ان کا کہنا تھا کہ اس دور میں پٹواریوں کے ریٹ دگنے ہو گئے ہیں،جو افسر کام نہ کرے اس کے پاس کارکنوں کو لے کر جائیں، اس افسر کی ’ایسی کی تیسی‘۔یاد رہے کہ وزیراعظم عمران خان ہمیشہ اپنی تقاریر میں پچھلی حکومتوں پر کرپشن کا الزام لگاتے رہے ہیں ،اس حوالے سے ایک کمیشن بھی تشکیل دیا گیا ہے جو 2008 سے 2018 تک لیے گئے قرضوں سے متعلق تحقیقات میں مصروف عمل ہے۔عمران خان کے بر سر اقتدار آنے کے باجود ان کے ہی ایک سینئیر عہدیدار کا پاکستان کے سب سے بڑے صوبے پنجاب میں کرپشن کے بڑھنے کا اعتراف سامنے آیا ہے۔