11 سال بعد پاکستان کے اقتدار پر (ق) لیگ کو لانے کی تیاریاں۔۔۔!!! اچانک چوہدری برادران ، نوا زشریف کی حمایت میں بیان کیوں دے رہےہیں؟ کھلاڑی عمران خان کے ساتھ گیم ڈال دی گئی

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ روز چوہدری برادران نے مولانا فضل الرحمان کے ساتھ پریس کانفرنس کی، کانفرنس کے دوران چوہدری برادران کی جانب سے واضح کیا گیا ہے کہ ملکی حالات جس طرف جا رہے ہیں انہیں دیکھ کر یہی لگتا ہے کہ آنے والے تین چار ماہ میں کوئی بھی وزیر اعظم بننے کا

تیار نہیں ہوگا، ق لیگ کا نواز شریف کو بیرون ملک بھیجنے کے معاملے پر مؤقف واضح ہے۔ یہ تبدیلی پاکستانی سیاست میں کس طرح آئی ، عوام اس کو لے کر کافی پریشان ہے کہ حکومت کی اہم ترین اتحادی جماعت ق لیگ کس طرح اچانک عمران خان کی پالیسیوں کے خلاف ہوگئی ؟ اس حوالے سے سینئر صحافی و کالم نگار ہارون الرشید اور سینئر اینکر پرسن عمران خان نے بھی میدان میں آگئے اور پاکستانی کو اصل حقیقت سے آگاہ کر دیا ۔تفصیلات کے مطابق سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک پیغام میں سینئر تجزیہ کار ہارون الرشید کا کہنا تھا کہ ’’چوہدری برادران عمران خاں کو دغا دے گئے؟ یا اس کی خاطر ڈرامہ رچا رہے ہیں؟ ابھی کچھ کہنا مشکل ہے۔ اس طرح کے معاملات وقت گزرنے کے ساتھ واضح ہوتے ہیں۔ دعوی تو مولوی صاحب کا یہ بھی ہے کہ اسٹیبلشمنٹ اور کپتان میں انہوں نے دراڑ پیدا کر دی ہے۔‘‘

اسی حوالے سے سینئر اینکر عمران خان کا کہنا ہے کہ ’’چوہدری برادران کے میڈیا پر عمران خان سے گلے شکوے اور اختلافات بالکل بھی حادثاتی نوعیت کے نہیں ہیں۔ ان کے پیچھے ایک بڑی خبر ہے جو جلد سامنے آئے گی۔ انتظار کیجیے‘‘۔

جبکہ سینئر تجزیہ کار عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ ’’ تبدیلی یا پیغام ؟حکومتی اتحادی رہنماؤں نے فوری طور پر میاں نواز شریف کو بیرون ملک بھجوانے کا مطالبہ کر دیا ہے، نواز شریف کو بیرون ملک غیر مشروط طور پر بھیجا جائے‘‘۔