بریکنگ نیوز۔۔۔!!! نواز شریف کا اتوار کے روز لندن روانہ ہونے کا فیصلہ، ساتھ کون کون جائے گا؟ فیصلہ ہوگیا

لاہور( ویب ڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف اور اپوزیشن لیڈر اور ن لیگ کے صدر شہباز شریف اتوار کو قومی ائر لائن کی پرواز سے لندن جائیں گے، سابق وزیر اعظم لاہور سے دبئی اور دبئی سے لندن روانہ ہونگے ۔ذرائع کے مطابق نواز شریف کے علاج کے لیے ہارلے اسٹریٹ کلینک میں

تیاریاں کی جارہی ہیں۔ذرائع کے مطابق شریف فیملی نے نواز شریف کے علاج کے لیے نیویارک میں بھی ڈاکٹروں سے بات چیت شروع کردی ہے۔اس سے قبل یہ خبر بھی آئی تھی کہ تحریک انصاف کی حکومت نے نواز شریف کا نام ایگزکٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) سے ہٹانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔شہباز شریف نے وزارت داخلہ میں سابق وزیراعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل سے ہٹانے کے لیے درخواست دی تھی۔درخواست میں کہا گیا تھا کہ نواز شریف کی بیماری کی تشخیص نہیں ہو پارہی ہے، انہیں بیرون ملک لے جانا ہوگا۔وزارت داخلہ نے قومی احتساب بیورو ( نیب) سے مشاورت کے لیے خط لکھ دیا ہے۔اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان اور وزیر داخلہ اعجاز شاہ نے ملاقات کی اور نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے سے متعلق بات چیت کی۔اس سے قبل ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ فضائی سفر کے دوران پلیٹ لیٹس کی کمی سے نواز شریف کے دماغ کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔ ڈاکٹرز کی رائے ہے کہ فضائی سفر کے لیے میاں نواز شریف میں پلیٹ لیٹس 50 ہزار سے زائد ہونا ضروری ہیں۔ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ فضائی سفر کے دوران پلیٹ لیٹس 50 ہزار سے کم ہوئے تو دماغ کو نقصان ہو سکتا ہے، نیز اس سفرکے دوران ایئر ایمبولنس اور ڈاکٹرز کا ساتھ ہونا بھی لازم ہے۔ ادھر شہباز شریف نے اپنے بھائی میاں نواز شریف کی تیمار داری کے لیے ذاتی اور سیاسی مصروفیت ترک کر دی ہے، نواز شریف کے ہمراہ شہباز شریف بھی بیرون ملک جا سکتے ہیں۔بعض ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ نواز شریف کی ممکنہ بیرون ملک روانگی 16 نومبر کو ممکن ہے۔