(ن) لیگ کی ایک اور وکٹ گرنے کے قریب۔۔۔!!! پوری پارٹی میں ہلچل مچ گئی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) جعلی ڈگری کیس میں مسلم لیگ ن کی ایک اور وکٹ گرنے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں مسلم لیگ ن کے حلقہ 241 سے منتخب شدہ رکن صوبائی اسمبلی محمد کاشف چوہدری کی نااہلی کے لئے دائر کی گئی

درخواست پر سماعت ہوئی ۔ سماعت اسلام آباد ہائی کورٹ کے سنگل رکنی بنچ جسٹس عامر فاروق نے کی۔درخواست گزار عبدالغفار کی جانب سے محمد سرور چوہدری عدالت میں پیش ہوئے۔ سرور چوہدری ایڈووکیٹ نے کہا کہ کاشف چوہدری کی نااہلی سے متعلق عدالت نے فیصلہ محفوظ کیا تھا۔ مگر عدالت نے کیس دوبارہ سماعت کے لئے مقرر کیا، عدالت نے یونیورسٹی سے ڈگری کی تصدیق طلب کیا تھا۔ دوران سماعت الخیر یونیورسٹی کی رپورٹ پڑھ کر عدالت میں سنایا گیا۔رپورٹ کے مطابق الخیر یونیورسٹی نے تصدیق کر دی کہ کاشف چوہدری الخیر یونیورسٹی کا کبھی اسٹوڈنٹس نہیں رہا۔سرور چوہدری ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ کاشف چودہری 62 ون ایف پر پورا نہیں اترتا، عدالت ایسے بد عنوان شخص کو نااہل قرار دے۔ جس پر کلثوم خالق ایڈووکیٹ نے کہا کہ یہ رپورٹ غلط ہے۔ جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ یہ رپورٹ عدالت نے الخیر یونیورسٹی سے منگوائی تھی، وہ پڑھ رہے تھے، کلثوم خالق ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ یہ رٹ پٹیشن قابل سماعت نہیں ہے۔عدالت میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے ثنا اللہ عدالت میں پیش ہوئے ، ثنا اللہ زاید ایڈووکیٹ نے دوران سماعت کہاکہ الیکشن کمیشن نے درخواست گزار کی استدعا کو درست قرار دیا، کاشف چوہدری نے بی بی اے کی جعلی ڈگری الیکشن کمیشن میں جمع کروائی۔ فریقین کے دلائل سننے کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ نے مسلم لیگ ن کے رکن صوبائی اسمبلی محمد کاشف چوہدری کی نااہلی پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔