ملکی حالات آؤٹ آف کنٹرول مگر راتوں رات شاہ محمود قریشی کس ملک چلے گئے ؟ حیران کن خبر

کوالالمپور(ویب ڈیسک) وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی 2 روزہ سرکاری دورے پر ملائیشیا پہنچ گئے،اس دورے کے دوران وہ وزیراعظم مہاتیر محمد سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے ملاقاتیں کریں گے۔ تفصیلات کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کے ایئرپورٹ پہنچنے پر ملائیشیا کی وزارت خارجہ کے ڈی جی نے شاندار استقبال کیا، اس موقع پر

پاکستانی ہائی کمشنر اور سینئر حکام بھی موجود تھے۔ وزیرخارجہ ملائیشین ہم منصب داتو سیف الدین کی دعوت پر دورہ کررہے ہیں، شاہ محمود وزیراعظم مہاتیر سمیت اعلیٰ قیادت سے ملاقاتیں کریں گے، ان کی ملائیشیا کی بزنس کمیونٹی سے بھی ملاقات ہوگی۔ پاکستان میں بیرونی سرمایہ کاروں کےلئے مراعات سے آگاہ کیا جائے گا، کاروبار کےلئے میسر بہترین مواقعوں سے بھی آگاہی فراہم کی جائے گی، وزیرخارجہ پاکستانی سفارتخانے میں”کمیونٹی سروس سینٹر” کا افتتاح بھی کریں گے۔ وزیرخارجہ کو کوالالمپور سمٹ میں شرکت کی دعوت ملائیشین ہم منصب نے دی تھی، وزیرخارجہ ملائیشیا میں وزیر خارجہ تاجر برادری سے بھی ملاقات کریں گے، ان کا کہنا ہے کہ وہاں کے تاجروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کے میسر مواقعوں سے آگاہ کیا جائے گا۔ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وفاقی وزیر داخلہ سید اعجاز شاہ نے کہا ہے کہ تمام فورسز الرٹ ہیں کسی بھی حالات سے نمٹیں گے، حکومت نے ڈی چوک جانے والے تمام راستے سیل کردیے، ڈپلومیٹک انکلیو کے راستوں کو بھی کنٹینرز سے بند کردیا گیا، سکیورٹی کیلئے15 ہزار اہلکار تعینات کردیے گے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی رہائش گاہ پر حکومتی مذاکراتی کمیٹی کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں حکومت نے مولانا فضل الرحمان سے مذاکرات کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ صادق سنجرانی نے کہا کہ ہمیں سنجیدگی سے مولانا کیساتھ مذاکرات کرکے حل نکالنا چاہیے۔ ہمیں اپوزیشن سے بات چیت کرنی چاہیے۔ مولانا صاحب ابھی تک اپنے معاہدہ پر قائم ہیں تو ہمیں بات کرنی چاہیے۔ہمیں صبر و تحمل سے کام لینا چاہیے۔ وزیر دفاع پرویز خٹک نے کہا کہ ہم مذاکرات کے لیے ہر وقت تیار ہیں۔