بڑی سیاسی خبر : مولانا فضل الرحمان کی نواز شریف سے ملاقات کی کوششیں۔۔۔ پس پردہ کیا سازش رچائی جا رہی ہے؟ جان کر کپتان بھی سر پکڑ کر بیٹھ گئے

لاہور (ویب ڈیسک) نوازشریف کی بیماری ، عدالتی ریلیف ملنے پر مسلم لیگ ن کی طرف سے مارچ میں بھرپور شرکت نہ کرنے پر مولانا فضل الرحمن کا لاہور میں نوازشریف سے ملاقات کا پلان ہے ، نواز شریف سے ملاقات ہونے کی صورت میں لیگی کارکنوں کوتاثر دیا جائے گا کہ

نوازشریف نے کہا ہے کہ دھرنے میں بھرپور شرکت کی جائے ، اس طرح فضل الرحمان ایک تیر سے دو شکار کریں گے ، ایک نوازشریف کی عیادت، دوسرا نوازشریف کے ساتھ ملاقات کا سیا سی فائدہ اٹھایا جائے گا۔ مصدقہ ذرائع کے مطابق فضل الرحمان جب لاہور پہنچیں گے تو ان کی کوشش ہو گی کہ وہ نوازشریف سے عیادت کے بہانے ملنے جائیں۔ اس ضمن میں نوازشریف کے قریبی ساتھی جو سابق وفاقی وزیر بھی رہے انتہائی متحرک ہو چکے ہیں اور وہ بھی ہر صورت یہ ملاقات چاہتے ہیں۔لیگی رہنما نے نوازشریف تک بھی یہ پیغام پہنچایا ہے کہ مولانا فضل الرحمان عیادت کیلئے آ نا چاہتے ہیں۔شریف خاندان اور ن لیگ کے کئی اہم رہنما اس ملاقات کے خلاف ہیں اور اس ضمن میں انہوں نے واضح طور پر میٹنگز میں بھی کہا کہ اگر نوازشریف کی بیمار ی کی حالت میں مولانا سے ملاقات کرائی جاتی ہے اور اسے مولانا سیاسی طور پر استعمال کریں گے ،اس سے تاثر جائے گا کہ نوازشریف کی بیماری بہانہ ہے اور اس سے سیاسی پوزیشن اور اخلاقی طور بھی منفی تاثر جائے گا اور آ ئندہ عدالتی ریلیف میں بھی پوزیشن خراب ہو سکتی ہے ۔ ن لیگ کے اندر کچھ لوگ ہر صورت میں مولانا اور نواز شریف کی ملاقات چاہتے ہیں جبکہ ایک بڑا دھڑا اس وقت ملاقات کے خلاف ہے ۔ شریف خاندان کی ایک بڑی شخصیت نے بھی سختی سے یہ کہا ہے کہ نوازشریف کی صحت پر دھرنے کی سیاست نہ کی جائے ۔ جمعیت علما اسلام کے ذرائع کے مطابق فضل الرحمان اس حوالے سے مسلم لیگ ن کے سابق وفاقی وزیر کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہیں ۔