پھسل گئی ، شہر یار آفریدی کی زبان بھی پھسل گئی ، رانا ثنااللہ کے بارے میں بات کرتے ہوئے کیسے انکی تعریف کر گئے ؟ آپ بھی جانیے

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزیر مملکت نے کہا کہ چند روز پہلے میکسیکو کے ڈرگ لارڈ ایل چیپو کے کارندوں نے میکسیکو کے دارالحکومت میں قانون نافذ کرنے والے اداروں پر حملہ کیا اور ایل چیپو کو پولیس کی حراست سے چھڑا کر لے گئے۔ ایک ایل چیپو پاکستان میں بھی ہے جسے دنیا رانا ثناءاللہ کے نام

سے جانتی ہے جسے پاکستان کے انسداد منشیات اور ڈرگ کنٹرول کے ادارے اینٹی نارکوٹکس فورس نے گرفتار کیا ہے، جس کے میجر سے جوانوں تک سبھی نے پاکستانیوں کو منشیات کے عذاب سے بچانے کےلئے اپنی جانوں کی قربانیاں پیش کی ہیں۔ شہریار آفریدی نے کہا کہ اے این ایف نے پاکستانی ایل چیپو رانا ثناءاللہ کو 15 کلو ہیروئن سمیت گھر سے نہیں پکڑا شاہراہ عام سے گرفتار کیا ہے، ضابطہ فوجداری کی دفعہ 173 کہتی ہے کہ 17 دن میں پراسیکیوشن ایجنسی ملزمان کے خلاف ثبوت عدالت میں پیش کرے جو اے این ایف کی ٹیم نے عدالت میں پیش کردیئے، پیش کئے گئے ثبوتوں میں برآمد شدہ ہیروئن ،گرفتاری کا وقت برآمد شدہ اسلحہ، ہمراہی غنڈے ، ہیروئن کی کیمیائی تجزیاتی رپورٹ اور دو درجن کے قریب گواہان جنہوں نے رانا ثناءاللہ اور اس کے گینگ کے خلاف ثبوت پیش کئے۔تحریک انصاف کے اہم رہنماءشہریارآفریدی جو کہ وزیرداخلہ بھی رہ چکے ہیں، گزشتہ روز ایک پریس کانفرنس کر رہے تھے اور اس دوران جوش خطابت میں ایسی غلطی کر گئے کہ انٹرنیٹ صارفین کو ان کا تمسخر اڑانے کا بھرپور موقع مل گیا۔ شہریار آفریدی زیرحراست ن لیگی رہنماءرانا ثناءاللہ کے متعلق بات کرتے ہوئے حسب سابق بین الاقوامی منشیات سمگلروں کے حوالے دے رہے تھے اور رانا ثناءاللہ کو ان کے ناموں سے پکار رہے تھے۔ اس دوران وہ ایسا بوکھلائے کہ رانا ثناءاللہ کو ”پاکستان کا الپچینو“ کہہ گئے۔ حالانکہ الپچینو کو منشیات کا سمگلر نہیں بلکہ ہالی ووڈ کا انتہائی معروف اداکار ہے۔ درحقیقت شہریار آفریدی رانا ثناءاللہ کو میکسیکو کے ڈرگ لارڈ الچاپو کے ساتھ تشبیہ دے رہے تھے مگر بات کرتے ہوئے ایک موقع پر انہیں پاکستان کا الپچینو کہہ گئے۔ لیاقت حسین نامی ٹوئٹر صارف نے اس پر لکھا ہے کہ ”شہریار آفریدی کسی کا لکھا ہوا بیان پڑھ رہا ہے۔ نہ لکھنے والے کو پتا ہے کہ الپسینو یا الپچینو کون ہے اور آفریدی کو ظاہر ہے یہ بھی نہیں پتا کہ وہ پڑھ کیا رہا ہے۔“ڈاکٹر خاور رندھاوا کا کہنا تھا کہ ”اس شخص کو الچاپو اور الپچینو کا فرق بھی نہیں معلوم۔ “دانش زیدی نامی صارف کا کہنا تھا کہ ”اس سے پتا چلتا ہے کہ یہ کس طرح حکومت چلا رہے ہیں۔“