بریکنگ نیوز: عثمان بُزدار کی چھٹی۔۔۔ چوہدری پرویز الٰہی کو وزیر اعلیٰ پنجاب بنانے کی تیاریاں

لاہور (نیوز ڈیسک) سینئر تجزیہ کار ہارون الرشید کا کہنا ہے کہ جتنا با اختیار عثمان بُزدار کو بنا دیا گیا ہے اس سے قبل کسی وزیر اعلیٰ کے پاس انتے اختیارات نہیں تھے، یہ بات میں نہیں خود گورنر پنجاب کہتے ہیں، لیکن میں سب کو ایک پکی بات بتا دیتا ہوں

کہ پنجاب کے وزیر اعلیٰ چوہدری پرویز الٰہی ہیں، وہ افسران کے ساتھ بھی رابطوں میں ہیں۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے ہارون الرشید کا کہنا تھا کہ مجھے تو ایک بات سمجھ نہیں آتی جسے نہ بات کرنی آتی ہے، نہ کروانا آتا ہے، جس کے پاس نہ تجربہ ہے اور نہ ہی اہلیت ایسے بندو کو وزیر اعلیٰ پنجاب کیسے بنا دیا گیا ہے؟ اس کی جگہ اگر پرویز الٰہی پنجاب کے وزیر اعلیٰ ہوتے تو آج حالات اور نتائج مختلف ہونے تھے۔ہارون الرشید کا کہنا تھا کہ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور کہتے ہیں کہ اس کی مثال پہلے نہیں ملتی، جتنا باختیار عثمان بزدار کو بنا دیا گیا ہے اس سے پہلے کوئی وزیر اعلیٰ اتنا باختیار نہیں تھا۔ میں سب کو ایک خبر دینا چاہتا ہوں کہ پرویز الہیٰ اس وقت افسران کے ساتھ رابطوں میں ہیں، پنجاب کے اگلے اور پکے وزیر اعلیٰ پرویز الٰہی ہی ہیں۔
دوسری جانب ایک خبر کے مطابق مولانا فضل الرحمان کے ہمراہ لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شہباز شریف کا کہنا تھا کہ 31 اکتوبرکوکشمیریوں کےحقوق کی آوازبھی اٹھائیں گے، اپنےآیندہ کے لائحہ عمل کا اعلان بھی کریں گے ، مولاناکےآزادی مارچ میں 31اکتوبرکوبھرپور شرکت کریں گے ، مولانا کےآزادی مارچ سےمتعلق میاں نوازشریف کی ہدایات ہمیں مل چکی ہیں، آج کاروباربندہے، اسپتالوں میں دوائیاں نہیں مل رہیں ، مولانا فضل الرحمان کی شخصیت میرے لیے قابل احترام ہے۔ شہباز شریف کا کہنا تھا کہ ملک کی تباہ کن صورتحال پی ٹی آئی حکومت کی ناکامی کا ثبوت ہے ، کراچی سےپشاور تک پوری قوم حکومت کوگھربھجوانے کامطالبہ کررہی ہے ، عمران خان اپنی ناکامی کی ذمے داری اداروں پر ڈالنا چاہتے ہیں ، ملک کی تباہ کن صارتحال پی ٹی آئی حکومت کی ناکامی کا ثبوت ہے ، جی ڈی پی 2.4پر پہنچ چکی،2018 میں 5.8 تھی ، 31 اکتوبر کواسلام آبادمیں اپنےمطالبات پیش کریں گے، آزادی مارچ میں بھرپورشرکت کریں گے،جلدنئےانتخابات ہونے چاہییں،عمران خان پوری طرح ناکام ہوچکےہیں،آج جو کچھ ہورہاہےپی ٹی آئی حکومت کی ناکامی کامنہ بولتاثبوت ہے،سرمایہ کاری ختم ہو چکی ہے،مہنگائی عروج پرہے،اس وقت ملک کی معاشی صورتحال تباہی کےدہانےپر ہے،ہم نےملکی صورتحال پربھرپوربحث کی۔