شہباز شریف اپنے دوستوں سے مریم نواز کے بارے میں کیا کہتے پھر رہے ہیں ؟تجزیہ کار ارشاد بھٹی کا حیرت انگیز دعویٰ

اسلام آباد (ویب ڈیسک)تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے کہاہے کہ شہباز شریف مریم نواز سے بڑے دکھی ہیں اور کئی دوستوں سے کہہ چکے ہیں کہ اب مریم نواز کی غلامی نہیں ہوتی نجی ٹی وی کے پروگرام”رپورٹ کارڈ“میں گفتگوکرتے ہوئے ارشاد بھٹو نے کہا کہ مجھے لگتاہے کہ متحدہ بانی نہیں بچیں گے

کیونکہ ان کی جانب سے غریبوں ، یتیموں اور بیواﺅں کے ساتھ کیا نہیں کیا گیا ؟ انہوں نے کہا کہ عمران فاروق کی بیوہ کو بھی بانی ایم کیو ایم کے خلاف درخواست دینی چاہئے اور ان کوسزا ملنی چاہئے ۔ارشادبھٹی کا کہنا تھا کہ عقلمندوں کواشارہ کافی ہے ، شہباز شریف کی کمر میں درد ہے اورپرانی ہے لیکن اتنی بھی نہیں ہے جتنیظاہرکررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ وہ کمر درد ہے جو وزیر اعلیٰ ہوتے ہوئے اورچیئر مین پی اے سی ہوتے ہوئے نہیں ہوتی ۔ انہوں نے کہا کہ شہباز شریف مریم نواز سے بڑے دکھی ہیں اور کئی دوستوں سے کہہ چکے ہیں کہ اب مریم نواز کی غلامی نہیں ہوتی ، وہ پارٹی کے اندر خود کو اجنبی اجنبی محسوس کررہے ہیں اور کہہ رہے ہیں کہ اس سے بہتر ہے میں سیاست چھوڑ دوں ۔ انہوں نے کہا کہ ایک گھر میں انقلابی اور مفاہمتی فلمیں چل رہی ہیں لیکن جب اچھا وقت آئے گا تو یہ سب ایک ہوجائیں ۔ انہوں نے کہا کہ شہباز شریف ابھی تک نہیں چاہتے کہ دھرنے میں شرکت کریں۔دوسری جانب مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہاہے کہ نوازشریف کی جانب سے مولانا فضل الرحمان کو لکھے گئے خط کی مجھے کوئی خبر نہیں ، پارٹی رہنماﺅں کی تمام آرانواز شریف تک پہنچا دی گئی ہیں ،نواز شریف فیصلہ کریں گے ، سب کوقبول ہوگا ۔نجی ٹی وی کے پروگرام ”نقطہ نظر “میں گفتگو کرتے ہوئے مریم اورنگزیب نے کہا کہ شہباز شریف کے ساتھ کوئی ماجرا نہیں ہوا ، ان کی کمر میں درد کامسئلہ ہے جوکافی عرصے سے ہے ، کل اجلاس میں بھی ان کوکمر دردتھی لیکن جو پارٹی رہنماﺅں کے اجلاس میں جو سفارشات کی گئی تھیں ، وہ شہباز شریف نے نواز شریف تک پہنچا دی ہیں۔مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ نوازشریف کی جانب سے مولانا فضل الرحمان کو لکھے گئے خط کی مجھے کوئی خبر نہیں ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ پارٹی رہنماﺅں کی تمام آرانواز شریف تک پہنچا دی گئی ہیں اور جونواز شریف فیصلہ کریں گے ، اس پر عمل کیا جائیگا ۔دوسری جانب سربراہ پشتونخوا ملی عوامی پارٹی محمود خان اچکزئی نے بھی آزادی مارچ کی حمایت کا اعلان کردیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ حکومت سے ہر طبقے کے لوگ تنگ ہیں لہٰذا مولانا فضل الرحمان کا بھرپور ساتھ دیں گے۔