چینی صدر شی جن پنگ کے دورہ بھارت سے پہلے ہمیں پوچھا کہ کیا ۔۔۔۔ شاہ محمود قریشی کا دنگ کر ڈالنے والا انکشاف

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ چین نے صدر شی جن پنگ کے دورہ بھارت سے پہلے پاکستان کو اعتماد میں لیا، بیجنگ صدر شی جن پنگ کے دورہ بھارت کے بعد بھی اسلام آباد کو پوری طرح باخبر رکھے گا۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ مقبوضہ کشمیر سے متعلق چین کی پوزیشن واضح ہے،

چینی قیادت نے پاکستان کی تاریخی پوزیشن کو اپنایا ہوا ہے۔وزیراعظم عمران خان اور چین کے صدر شی جن پنگ کے درمیان بیجنگ کے اسٹیٹ گیسٹ ہاؤس میں ملاقات ہوئی، صدر شی جن پنگ نے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اور چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید سمیت وفد میں شامل شخصیات سےمصافحہ کیا اوروفد کا خیرمقدم کیا۔دورہ چین کے حوالے سے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ کشمیر پر چین نے پاکستان کی تاریخی پوزیشن کو اپنایا ہوا ہے، چین کے صدر شی پنگ غیر رسمی اور مختصر دورے پر بھارت جائیں گے جس کے بعد پاکستان کو اس دورے سے متعلق آگاہ کیا جائے گا۔بھارتی میڈیا کے مطابق چینی صدر شی جن پنگ11،12 اکتوبر کو بھارت کا دورہ کریں گے۔وزیراعظم عمران خان دو روزہ دورے پر چین میں ہیں جو آج مکمل ہوجائے گا جس کے بعد ذرائع کے مطابق وہ فوری طور پر سعودی عرب اور پھر ایران کا دورہ کریں گے۔دوسری جانب تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے کہاہے کہ عمران خان اپنے گھر سے احتساب کرسکتے ہیں تو خوش آمدید بصورت دیگر وہ ماتمی تقریریں کرتے رہیں گے اور ہم بھی ماتم کرتے رہیں گے۔نجی ٹی وی کے پروگرام ”رپورٹ کارڈ“میں گفتگوکرتے ہوئے ارشاد بھٹی نے کہا کہ جب سے وزیر اعظم نے یہ بیان دیاہے کہ چین نے وزیر کے عہدے کے 400افراد کوجیلوں میں ڈالاہے سب کو جمہوریت خطرے میں نظر آرہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کو پتہ ہے کہ سابق صدر اوردوسابق وزیر اعظم جیلوں میں ہیں لیکن ان کی جانب سے کہا گیا ہے کہ ہم بھی کرپشن ختم کرنے کیلئے چین سے سیکھنا چاہتے ہیں تو اس میں کیا غلط بات ہے ؟ارشاد بھٹی کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان نے کوئی بات غلط نہیں کی ہے ، عمران خان جب اپوزیشن میں تھے تو زبانی طور پر پارلیمنٹ پر لعنت بھیجی لیکن عملی طور پر بہت سوں نے پارلیمنٹ پر لعنت بھیجی ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان اپنے گھر سے احتساب کرسکتے ہیں تو خوش آمدید بصورت دیگروہ ماتمی تقریریںکرتے رہیں گے اور ہم بھی ماتم کرتے رہیں گے ، کرناہے تو کچھ کرلیں ، ابھی چارسال باقی ہیں۔