اگر یہ کام ہوا تو پیپلز پارٹی عمران خان کے ساتھ کھڑی ہو گی “بلاول بھٹوزرداری نے واضح اعلان کر دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی زیرصدارت اسلام آبادمیں ہونے والے کورکمیٹی اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ،بلاول بھٹو زرداری نے کور کمیٹی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ کسی مسلط کردہ قومی حکومت کا حصہ بنیں گے نہ حمایت کریں گے،مرادعلی شاہ جیل میں ہوں یا ریل میں وہ وزیر اعلیٰ رہیں گے۔

نجی ٹی وی کے مطابق بلاول بھٹوکا کہنا تھا کہ مہنگائی یاجمہوریت کی بات کی گئی تو اپوزیشن کے ساتھ کھڑے ہوں گے،عمران خان کی پھانسی یا مذہب پر سیاست کا ساتھ نہیں دیں گے ،ایسا ہوا تو پیپلزپارٹی عمران خان کے ساتھ کھڑی ہوگی،پارٹی رہنماﺅں نے رائے دیتے ہوئے کہا کہ فضل الرحمان کے ساتھ دھرنے میں نہیں گئے تو کہا جائے گا ڈیل کرلی،اس پر بلاول بھٹو نے کہا کہ دھرنے میں گئے تو کہا جائے گا گرفتاریوں کے باعث ایسا کیا،پیپلز پارٹی اپنی سیاست کرے گی ،بلاول بھٹو نے کہا کہ مریم نواز کی گرفتاری کے بعد مسلم لیگ ن سے موثر رابطہ نہیں رہا ،اے این پی ،بی این پی اور دیگرجماعتوں کے ساتھ رابطے کریں گے ،بلاول بھٹونے کہا کہ کراچی میں آرٹیکل 149 نافذکیا گیا تو بھرپور مزاحمت کی جائے گی۔جبکہ دوسری جانب ایک خبرکے مطابق وزیراعظم عمران خان نے پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز کا ہیڈآفس کراچی سے اسلام آباد منتقل کرنے کی منظوری دید ی ہے ۔نجی ٹی وی ڈان نیوز کے مطابق یہ بات قومی اسمبلی میں وزارت ہوابازی کی جانب سے جمع کروائے گئے تحریری جواب میں سامنے آئی ہے ۔ وزارت ہوابازی کا کہناتھا کہ عوامی مفاد کو مد نظر رکھتے ہوئے پی آئی اے کا ہیڈ آفس کراچی سے اسلام آباد مرحلہ وار منتقل کیا جائے گا ۔یاد رہے کہ وزیراعظم عمران خان دورہ سعودی عرب کیلئے روانہ ہو گئے ہیں جہاں سے وہ 21 ستمبر کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کیلئے نیویارک جائیں گے جہاں وہ پی آئی اے کے ہوٹل میں ہی قیام کریں گے ۔ اس دوران وہ 24 ستمبر کو امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے دیے جانے والے عشائیے میں شرکت کریں گے جہاں غیر رسمی ملاقات کا بھی امکان ہے ۔عمران خان 27 ستمبر کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خطاب بھی کریں گے جوکہ ساڑھے آٹھ بجے سے ساڑھے دس پاکستانی وقت کے دوران نشر کیا جائے گا ۔