اختیارات کا ناجائز استعمال : عمران خان نے 228 ارب روپے اندر کھاتے کسے دے دیے اور کیوں ؟ وزیر اعظم کے خلاف ناقابل یقین انکشاف کر دیا گیا

پشاور(ویب ڈیسک )امیر جماعت اسلامی خیبر پختونخوا سینیٹر مشتاق احمد خان نے پی ٹی آئی حکومت کی جانب سے توانائی کے شعبے میں کام کرنے والی مختلف کمپنیوں کے ذمہ واجب الادا 228ارب سے زائد مالیت کے قرضوں کو معاف کرنے کے فیصلے مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت نے اپنے چہیتوں کو نوازنے

میں گزشتہ حکومتوں کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے،وزیر اعظم اور صدر پاکستان اپنے ذاتی دوستوں کو نوازنے کے لئے اپنے اختیارات کا غلط استعمال کررہے ہیں۔سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا کہ کمپنیوں کے ذمے واجب الادا رقم قوم کی امانت تھی، انہیں یوں بیک جنبش قلم معاف کرنا انصاف کا خون ہے،ایک ہی دفعہ میں اتنا بڑا قرضہ معاف کیا گیا ہے کہ 1971ء سے 2009ء کے درمیان جو مجموعی قرضے معاف کئے گئے ہیں یہ ان سے زیادہ ہے،عوام کا خون چوسنے والے بڑے سرمایہ داروں کے ذمہ واجب الادا قومی دولت معاف کردی گئی ،پی ٹی آئی کی حکومت نے انصاف کا نعرہ لگایا لیکن سب سے زیادہ ناانصافی انہی کی حکومت میں ہورہی ہے،قوم کی دولت لوٹنے والوں کو سزا دینے کی بجائے ان کو نواز نا ملک وقوم سے غداری ہے، پی ٹی آئی نے احتساب کے اپنے نعرے کو شرمادیا،پی ٹی آئی حکومت غریبوں کو لوٹ رہی اور صنعت کاروں کو نواز رہی ہے،جماعت اسلامی اس ظلم پر خاموش نہیں رہے گی،اس ظلم کے خلاف بھرپور احتجاج کریں گے۔سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا کہ ان اداروں میں اینگرو پاکستان، اینگرو فرٹیلائزرز ، کے الیکٹرک ، پاک عرب فرٹیلائزرز ، ٹیکسٹائل انڈسٹری اور سی این جی سیکٹر شامل ہیں،انصاف کی فراہمی کے دعویدار اور قومی دولت لوٹنے والوں سے ایک ایک پائی واپس لینے کے نعرے لگانے والوں نے ایک ہی آرڈیننس کے ذریعے سے قومی خزانے کے دو سو اٹھائیس ارب روپے چند بڑے سرمایہ داروں کو معاف کردئیے۔ا نہوں نے کہا کہ کے الیکٹرک کو تقریباً 36ارب ، فرٹیلائزرز کو 150ارب، ٹیکسٹائل انڈسٹری کو 60ارب اور اسی طرح سی این جی سیکٹر اور آئی پی پیز کواربوں روپے معاف کردئیے گئے ، توانائی کے شعبوں میں کام کرنے والی کمپنیوں نے عوام سے پیسہ بٹورا لیکن اس سے قومی خزانے کو کوئی فائدہ نہیں پہنچا،وزیراعظم اور صدر پاکستان کے ذاتی دوستوں نے قومی خزانے کو اربوں روپوں کا نقصان پہنچایا،حکومت نے ان کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے ان کے بقایا جات معاف کرادئیے۔انہوں نے کہا کہ دوسروں پر انگلیاں اٹھانے والوں کا اپنا دامن داغدار ہوگیا ہے،پی ٹی آئی کی حکومت کا احتساب کا نعرہ انتقام کے سوا کچھنہیں،حکومت نے اپوزیشن کے چوروں کو تو جیل بھجوا دیا لیکن اپنے چوروں کو جیل بھیجنے یا سزا دلوانے کی بجائے ریلیف دے دیا، پی ٹی آئی چوروں کے لئے ڈرائی کلین مشین کا کام کررہی ہے، جو بھی چور اس پارٹی میں شامل ہوتا ہے وہ ڈرائی کلین ہوکر پاک صاف ہوجاتا ہے۔ ہماری جدوجہد حکومت اور اپوزیشن دونوں کے چوروں کے خلاف ہے۔