بریکنگ نیوز: پنجاب میں بڑے پیمانے پر سیلابی ریلے کی پیشگوئی۔۔۔ اگلے 72 گھنٹوں کے لیے ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) محکمہ موسمیات کے سیلاب کی پیشنگوئی کرنے والے شعبہ (ایف ایف ڈی) نے آئندہ 72 گھنٹوں کے دوران دریائے راوی اور چناب کے 10 نالوں میں بڑے سیلابی ریلے کی پیشنگوئی کرتے ہوئے ہائی الرٹ جاری کر دیا ہے۔ یہ ہائی الرٹ آئندہ دو روز کے دوران درمیانے درجے کی طوفانی بارشوں

کی پیشنگوئی کے پیش نظر جاری کیا گیا ہے۔ایف ایف ڈی کی جانب سے جاری کردہ تفصیلات کے مطابق آئندہ 48 گھنٹوں میں دریائے راوی اور چناب کے دس نالوں کے نشیبی علاقوں میں بڑے پیمانے پر سیلابی ریلے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔ ایف ایف ڈی نے کہا کہ دریائے راوی کے بڑے پیمانے پر یہ سیلابی ریلے حصری، بین، بسنتر، اوجھ، جھاڑی، کھٹر اور ڈگ نالوں جبکہ دریائے چناب کے پالکو، ایک، بھمبر نالوں کے نشیبی علاقوں میں سیلاب آنے کا خدشہ ہے۔ ایف ایف ڈی نے تمام متعلقہ حکام کو الرٹ جاری کرتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ وہ پیشگی اقدامات کئے جائیں۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پنجاب میں بارشوں کی وجہ سے دریائے سندھ میں پانی کی سطح مسلسل بلند ہورہی ہے اور گھنٹوں کے حساب سے کئی کئی ہزار کیوسک کا اضافہ ہورہا ہے، دریائے سندھ میں گڈو بیراج کے مقام پر درمیانے درجے اور سکھر بیراج کے مقام پر نچلے درجے کی سیلابی صورتحال برقرار جبکہ گڈو تا سکھر بیراجوں کے درمیان کچے کا بڑا علاقہ زیر آب آنے سے فصلیںبھی متاثر ہوئی ہیں،دریائے سندھ کے حفاظتی بندوں پر بھی پانی کا دباؤ بڑھ گیا ہے ،گڈو بیراج پر پانی کی آمد 3 لاکھ 94 ہزار 787 کیوسک اور اخراج 3 لاکھ 54 ہزار 985 کیوسک،سکھر بیراج پر پانی کی آمد 3 لاکھ 28 ہزار 263 کیوسک اور اخراج 2 لاکھ 72 ہزار 888 کیوسک، کوٹری بیراج پر پانی کی آمد ایک لاکھ 59 ہزار 093 کیوسک اور اخراج 1 لاکھ 42 ہزار 288 کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے، محکمہ آبپاشی کے مطابق آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران پانی کی سطح میں مزید اضافہ کا امکان ہے۔