’’نوازشریف کو جیل میں وہ سہولیات دی جارہی ہیں جو زرداری کے پاس بھی نہیں۔۔‘‘پنجاب حکومت نے شہباز شریف کے خط کا ناقابل یقین جواب دے دیا

لاہور( ویب ڈیسک)پنجاب حکومت نے نوازشریف کو جیل میں دی گئی سہولتوں سے متعلق شہبازشریف کے خط کا جواب دیدیا۔شہباز شریف نے چیف سیکرٹری کے نام خط میں نواز شریف کو جیل میں فراہم کی گئی سہولتوں سے متعلق وضاحت مانگی تھی جس کے بعد چیف سیکرٹری نے خط محکمہ داخلہ کو ضروری کارروائی کے لیے بھجوا دیا تھا۔

ذرائع کے مطابق صوبائی حکومت نے اپنے خط میں بتایا ہے کہ نواز شریف کو میڈیکل بورڈ کی سفارش پر ائیرکنڈیشنر اور دیگر سہولتیں دی جارہی ہیں، ان کو جیل میں ہیٹر، ٹی وی، ٹیبل کرسی اور مشقتی کی سہولت بھی دستیاب ہے۔پنجاب حکومت کے ذرائع کے مطابق خط میں مزید بتایا گیا ہے کہ نوازشریف کی صحت کو ڈاکٹر اور دیگر طبی سہولتیں بھی فراہم کی جارہی ہیں، ان کو گھر سے کھانا منگوانے اور اہل خانہ سے ملاقات کی بھی اجازت ہے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق اکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر قائد شہباز شریف نے کہا ہے کہعظمی بخاری او ردیگر خواتین کارکنوں پر بہیمانہ تشدد فسطائی ذہنیت کا ثبوت ہے،کارکن ہمارے سر کا تاج اور پارٹی کا قیمتی اثاثہ ہیں،کارکن اپنے حوصلوں سے شہری آزادیوں اور حق گوئی کی نئی تابندہ تاریخ لکھ رہے ہیں ۔سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے پارٹی کی صوبائی سیکرٹری اطلاعات اور رکن اسمبلی عظمی بخاری کے گھر جا کر ان کی عیادت کی ۔شہباز شریف نے پولیس کی بدسلوکی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ شرمناک اور افسوسناک عمل ہے،عظمی بخاری او ردیگر خواتین کارکنوں پر بہیمانہ تشدد فسطائی ذہنیت کا ثبوت ہے،کارکن ہمارے سر کا تاج اور پارٹی کا قیمتی اثاثہ ہیں،کارکن اپنے حوصلوں سے شہری آزادیوں اور حق گوئی کی نئی تابندہ تاریخ لکھ رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ(ن)نے ہمیشہ ماؤں بہنوں کو عزت دی اور احترام کیا۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کی حکومت میں سیاسی ورکرزخواتین پر تشدد کیاجارہا ہے،عظمی بخاری کو ابھی تک میڈیکل رپورٹ نہیں دی جارہی،ایک سادہ کاغذ پر جعلی رپورٹ بنا کر دینا بزدلی کا ثبوت ہے۔ انہوں نے کہا کہ فاشسٹ حکومت سے اب سیاسی خواتین ورکرز بھی محفوظ نہیں رہی، رکن اسمبلی کے ساتھ بدتمیزی کرنے والے پولیس اہلکار کے خلاف ابھی تک کاروائی نہیں گئی،مسلم لیگ (ن)اس اہلکار کیخلاف قانونی چارہ جوئی کرے گی۔