سینیٹ الیکشن میں ہم نے 14نہیں بلکہ 17لوگ خریدے وہ 17لوگ کون ہیں؟ فیصل واوڈا نے آج کی سب سے تہلکہ خیز خبر بریک کر دی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) حکومت کے حمایت یافتہ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی ناٹ آؤٹ رہے، تحریک عدم اعتماد میں حزب اختلاف کے میر حاصل بزنجو آؤٹ ہوگئے، اپوزیشن کے 64 اور حکمران اتحاد کے 36 سینیٹرز نے پولنگ میں حصہ لیا، تحریک عدم اعتماد کے حق میں50 ووٹ پڑے، جبکہ صادق سنجرانی کو45 ووٹڈالے گئے، 5 مسترد قرار پائے،

یوں تحریک کوایک چوتھائی ووٹ نہ پڑنے پر مسترد کردیا گیا۔جس کے بعد کہا جا رہا ہے کہ اپوزیشن کے 14سینیٹرز نے اپنی پارٹیوں کے خلاف ووٹ دیا جس کے بعد اب حکومتی وزیر نے نیا دعویٰ کر دیا ہے۔ فیصل واوڈا نے دعویٰ کیا ہے کہ ہم سے پوچھیں تو وہ 14 نہیں 17 لوگ تھے۔ انہوں نے کہا کہ 17کے قریب نام بھی بتانے کو تیار ہوں، پیپلز پارٹی کا ایک جادوگر تو اکثر ٹی وی پہ نظر بھی آتا رہتا ہے۔انہوں نے سوال اٹھایا کہ پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے لوگ بکاؤ تھے جو وہ بک گئے؟۔فیصل واوڈا نے کہا ہے کہ مریم نواز نے تحریکِ عدم اعتماد کا ساتھ این آر اوحاصل کرنے کے لیے دیا ۔ انہوں نے الزام لگایا ہے کہ اپوزیشن پارٹیوں کے پاس اپنا منہ دکھانے کیلئے کوئی جگہ نہیں بچی، مریم نواز دھوکے بازتھیں اور دھوکے باز ہیں۔ فیصل واوڈا نے کہا کہ مریم نواز نے انصاف کے نظام کو دھوکا دیا ہے۔ وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ جو سیاسی طالب علم ہوتا ہے وہ صبر اور خبر پر نظر رکھتا ہے اور میں صبر بھی رکھتا ہوں اور خبر بھی۔فیصل واوڈا نے بتایا کہ جہاں ضمیر فروشی کی بات ہو وہاں عمران خان خفیہ رائے شماری کے خلاف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مریم نواز پارٹی کی لیڈر ہی نہیں بلکہ نائب صدر بھی ہیں اور فیصلہ ان کا بھی آنا ہے۔ دوسری جانب وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعا ت و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمن صاحب آپ کے سینیٹرز نے آپ پر عدم اعتماد کر دیا ہے، مولانا صاحب اکتوبر کے احتجاج کی کال واپس لیں ورنہ اس سے بدترانجام ہو گا۔