پرندوں کے اڑنے کا وقت۔۔۔؟؟؟ وزیر اعظم کے ترجمان ’ ندیم افضل چن ‘ کا مستعفی ہونے کا فیصلہ، حکمران جماعت میں حیرت انگیز صورتحال پیدا ہوگئی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) سینئر صحافی عارف حمید بھٹی نے انکشاف کیا ہے کہ وزیر اعظم کے ترجمان اور انتخابات 2018 میں پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کرنے والے مرکزی رہنماء ندیم افضل چن مستعفی ہونے والے تھے ، کیونکہ وہ جو سچ بتانا چاہتے ہیں اسے اہمیت نہیں مل پاتی ۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے معروف صحافی و تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے کہا کہ میرے نہایت قابل دوست ہیں ندیم افضل چن، کچھ دن قبل ندیم افضل چن بھی مستعفی ہونے والے تھے۔ ندیم افضل چن پہلے پاکستان پیپلز پارٹی میں تھے ، جس کے بعد انہوں نے پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کر لی ۔عمران خان نے ان کو اپنا ترجمان مقرر کیا تھا۔ عارف حمید بھٹی نے وزیراعظم عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ اپنی جماعت کے ندیم افضل چن جیسے چند لوگوں ، جو آپ کو سچ بتاتے ہیں، کو ناراض نہ کریں۔ اُن کی بات سنیں۔ ضروری نہیں کہ ہر وہ بات اچھی ہے جس میں آپ کی تعریف کی جائے۔ عارف حمید بھٹی نے کہا کہ کچھ دن پہلے کی بات ہے کہ ندیم افضل چن ناراض ہو گئے تھے جس کے بعد کراچی سے ایک وفاقی وزیر اور دو اور اہم لوگوں نے جا کر انہیں منایا۔یاد رہے کہ ندیم افضل چن اس سے قبل پاکستان پیپلز پارٹی کا حصہ تھے لیکن انہوں نے الیکشن سے قبل پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کر لی تھی اور نیا پاکستان کا نعرہ بھی لگایا تھا۔ ندیم افضل چن کو وزیراعظم کا ترجمان مقرر کیا گیا تھا، وزیراعظم آفس سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق ان کی تقرری وزیراعظم نے کی ۔وہ اعزازی حیثیت سے کام کریں گے جس کے بعد پاکستان تحریک انصاف کے رہنما ندیم افضل چن کو ایک عہدے پر تقرری مل گئی تھی۔ ندیم افضل چن کو پارلیمانی روابط پر وزیراعظم کا معاون خصوصی بنا دیا گیا تھا تاہم اب ان کے ناراض ہونے کی اطلاعات بھی موصول ہو رہی تھیں لیکن عارف حمید بھٹی کے مطابق انہیں منا لیا گیا ہے۔