پنجاب کی سیاست میں نیا موڑ۔۔۔۔ مسلم لیگ (ق) نے بھی اہم ترین وکٹ اُڑا کر رکھ دی

لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستانی سیاست میں اس وقت عجیب و غریب کیفیت چل رہی ہے، کوئی پتہ نہیں کسی وقت بھی کیا ہوجائے ، ق لیگ ویسے تو حکومت کی اتحادی جماعت ہے لیکن اس کے حوالے سے سسینئر صحافی ہارون الرشید دعویٰ کر چکے ہیں کہ ق لیگ ایک پریشانی کے عالم

میں ہے اور کیونکہ اگر ن لیگی رہنماء پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کر لیتے ہیں تو پھر ایک فاروڈ بلاک بن جائے گا اور یوں انکی سیاسی ساکھ متاثر ہوگی تاہم ق لیگ بھی اہم وکٹ اُڑانے میں کامیاب ہوگئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور میں پی ایس پی میڈیا سیکرٹری پنجاب چوہدری تنویرگجر نے اپنے ساتھیوں سمیت گزشتہ دنوں پاکستان مسلم لیگ ق سینیٹر کامل علی آغا سے ملاقات کی، ملاقات میں پنجاب کی سیاسی صورتحال کا جائزہ لیا گیا، ملاقات کے بعد چوہدری تنویر گجر نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ ق لیگ میں شمولیت کا اعلان کیا۔ ق لیگ کے سینئر رہنماء کامل علی آغا کی جانب سے چوہدری تنویر اور انکے ساتھیوں کو ق لیگ میں خوش آمدید کہا گیا ۔

دوسری جانب گزشتہ روز ایوان وزیر اعلیٰ میں مسلم لیگ ن لاہور کے مرکزی رہنماء یونس انصاری نے وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کی، ملاقات میں وزیر اعلیٰ پنجاب سردار احمد خان بُزدار بھی شریک تھے۔ ملااقات میں پنجاب کی سیاسی صورتحال اور آئندہ کے لائحہ عمل کے حوالے سے گفتگو کی گئی، ملاقات میں یونس انصاری نے وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان احمد خان بُزدار کی قیادت پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے باقاعدہ تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کر دیا۔ اس موقع پر یونس انصاری کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں پاکستان درست سمت سفر کر رہا ہے، کرپشن کرنے والے افراد جان بوجھ کر چیخیں مار رہے ہیں جبکہ وہ لوٹا ہوا پیسہ واپس کرنے کے بعد آسانی سے زندگی گزار سکتے ہیں، کچھ عرصے بعد پاکستان انشاء اللہ ترقی یافتہ ممالک کی صف میں کھڑا ہوجائے گا ۔ اس موقع پر وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان احمد خان بُزدار کی جانب سے یونس انصاری کو پارٹی میں خوش آمدید کہا اور انہیں روایتی مفلر بھی پہنایا گیا۔ یہاں پر یہ امر بھی قابلِ ذکر ہے کہ یونس انصاری نے مسلم لیگ ن کے اراکین پنجاب اسمبلی کو وزیر اعظم سے بنی گالا میں ملاقات کرا کر مسلم لیگ ن میں فارورڈ بلاک بنانے کا دعویٰ کیا تھا۔