’’یہ ہتھکڑیاں ہیں اور دوسری جانب پی ٹی وی کےکیمرے ‘‘نواز شریف کے دور حکومت میں ایف آئی اے کی ٹیم کو وزیراعظم ہاوس بلا کر دھمکاتے ہوئے کس بڑے کیس کو مکمل دبانے کا کہا گیا تھا ؟ تہلکہ خیز انکشافات

لاہور (ویب ڈیسک) شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری کو مسلم لیگ نے سیاسی انتقامی کاروائی کا حصہ قرار دیا ہے ۔ شہباز شریف نے طریقہ کا ر کو بھونڈا کہتے ہوئے کہا کہ عمران خان کو یہ سودا بہت مہنگا پڑے گا ۔جبکہ اس پر بات کرتے ہوئے معروف تجزیہ نگار ستار خان

نے کہا ہے کہ شریف فیملی کے دور حکومت میں کی بات کریں تو ان کی حکومت میں سیاستدان کو گرفتار کرنا تو دور کی بات بیورو کریٹس کو پکڑنا بھی مشکل ہے ۔ میاں نواز شریف اوکاڑہ گئے کسی نے ایس ایس پی کی شکایت لگائی جس پر اسے گرفتارکرنے کا حکم جاری کر دیا ، یہ سنتے ہی ایس ایس پی موقع پر بے ہو گیا تھا انہوں نے کہا کہ میرے خلاف ثبوت لائو پھر گرفتار کر و ۔ معروف سینئرتجزیہ نگار کا مزید کہنا تھا کہ نواز شریف کے دورحکومت میں ایف آئی اے کے چھ ڈائریکٹرز تھے جن میں ایک شخص بعد میں آئی جی بنا اس وقت طاہر خلیل نواز شریف کے پولیٹیکل سیکرٹری تھے ، ایف آئی اے کی پوری ٹیم کو وزیراعظم ہائوس بلایا گیا جہاں انہیں کہا گیا کہ یہ پی ٹی وی کے دو کیمرے ہیں جبکہ دوسری جانب ہتھکڑیاں لگی ہیں اگر آپ اس پر دستخط نہیں کریں گے کہ ہم نے موٹروے سیکنڈل اور پیلی گاڑیاں سیاسی انتقام کیلئے بنائی تو آپ کو ہتھکڑیاں لگا دی جائیں گے ۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ وزارت اطلاعات میڈیا کی معاونت سے عوام الناس تک صحیح معلومات پہنچانے اور منفی پروپیگنڈے کو بے نقاب کرنے میں اپنا کردار مزید مؤثر طریقے سے ادا کرے۔اے پی پی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم کی زیر صدارت وزات اطلاعات کا اجلاس منعقد ہوا جس میں معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان، سیکرٹری اطلاعات زاہدہ پروین، پرنسپل انفارمیشن آفیسر طاہر خوشنود اور وزارت کے دیگر سینئر افسران شریک تھے۔ڈاکٹر فردوس عاشق نے حکومتی ریفارم ایجنڈے کو عوام میں اجاگر کرنے کیلئے وزارت اطلاعات کی جانب سے اٹھائے گئے مختلف اقدامات سے وزیر اعظم کو آگاہ کیا۔وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومتی اداروں میں سزا و جزا کی روایت کو مضبوط کرنا حکومتی اصلاحاتی ایجنڈے کا اہم جزو ہے۔انہوں نے ہدایت کی کہ وزارت اطلاعات کے مختلف شعبوں کو مزید متحرک کیا جائے تاکہ عوام تک معلومات بہم پہنچانے اور حکومتی ریفارمز ایجنڈے کو اجاگر کرنے کے عمل میں مزید بہتری لائی جاسکے۔عمران خان نے کہا کہ عوام کو حکومت کی پالیسیوں سے آگاہ کرنے اور ملک و قوم کے وسیع تر مفادات میں اٹھائے گئے اقدامات کو اجاگر کرنے میں وزارت اطلاعات کا کلیدی کردار ہے۔وزیراعظم نے شرکا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت نے مشکل حالات میں حکومت کی باگ ڈور سنبھالی۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے معاشی استحکام اور ملک کے وسیع تر مفاد میں مشکل فیصلے کیے، گزشتہ 10 ماہ میں حکومت نے سماجی، معاشی و اقتصادی اور انتظامی شعبوں میں جو اصلاحات متعارف کرائی ہیں ماضی میں ان کی نظیر نہیں ملتی۔