’’ یہ عمران خان کی حکومت ہے ، لوٹی ہوئی دولت واپس کرنی پڑے گی۔۔۔‘‘ شاہد حاقان عباسی کی گرفتاری پر حکومت نے بھی دوٹوک اعلان کر دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کی رہنما اور مشیر اطلاعات فردوش عاشق اعوان کا سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری پر ردِعمل سامنے آیا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ قانون کی نظر میں سب برابر ہیں۔یہ نیا پاکستان ہے ، اب ادارے

خواہشات کے تابع نہیں، قانون کے تابع ہیں،فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ حکومت میں کسی نے اختیارات کا غلط استعمال کیا یا کرپشن کی تو ضرور گرفتار ہونا چاہئیے،انہوں نے مزید کہا کہ ہم اداروں کو مضبوط اور با اختیار دیکھنا چاہتے ہیں۔عمران خان نے اداروں کو آزار اور مضبوط کیا۔جب کہ پی ٹی آئی رہنما فیاض الحسن چوہان کا کہنا ہے کہ نیب نے شاہد خاقان عباسی کو چار بار بلایا انہوں نے کہا کہ میں نہیں آؤں گا۔جو مرضی کر لیں لوٹا ہوا پیسہ واپس کرنا پڑے گا۔یہ سمجھ رہے تھے آج بھی زرداری کی حکومت ہے۔ اب زرداری کی نہیں عمران خان کی حکومت ہے۔واضح رہے آج سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔نیب نے آج سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو طلب کر رکھا تھا لیکن انہوں نے نیب کے سامنے پیش ہونے سے معذرت کر لی تھی۔ نیب راولپنڈی نے شاہد خاقان عباسی کو ایل این جی ٹرمینل کا غیر قانونی ٹھیکہ دینے کے الزام میں تفتیش کے لیے طلب کیا تھا اور سابق وزیراعظم کو صبح 10 بجے نیب راولپنڈی میں پیش ہونے کی ہدایت کی گئی تھی لیکن وہ پیش نہیں ہوئے۔نیب کے مطابق شاہد خاقان عباسی کے خلاف ایل این جی ٹرمینل کا ٹھیکہ قواعد و ضوابط کے خلاف دینے کے الزام میں تحقیقات کا آغاز کیا گیا۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان نے من پسند کمپنی کو 15 سال کا ٹھیکہ خلاف ضابطہ دیا جس سے قومی خزانے کو مبینہ طور پر اربوں روپے کا نقصان پہنچا۔ دوسری جانب گذشتہ روز چئیرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ ادارہ ’’احتساب سب کے لیے‘‘ کی پالیسی پر گامزن ہے۔ انہوں نے اس عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ بدعنوانی ناسور اور ملکی ترقی و خوشحالی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔