بریکنگ نیوز: شاہد خاقان عباسی کو بھی گرفتار کر لیا گیا ، مگر کہاں سے اور کیسے ؟ حیران کن اطلاعات

لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک) ن رہنماء مسلم لیگ ن کے اہم ترین رہنماء اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ ذرائع مسلم لیگ ن کے مطابق نیب حکام نے شاہد خاقان عباسی کو ٹھوکر نیاز بیگ کے قریب سے موٹر وے ٹول پلازہ پر لاہور آتے ہوئے گرفتار کیا گیا ہے۔ نیب کی ٹیم نے شاہد خاقان

عباسی کو نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ہے۔ خیال رہے کہ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے قومی احتساب بیورو طلب کیا گیا تھا، شاہد خاقان عباسی نے نیب کے احکامات ہوا میں اڑا دیے تھے اور طلبی کے باجود نیب کے سامنے پیش نہ ہوئے۔سابق وزیر پیٹرولیم شاہد خاقان عباسی کے خلاف نیب کی تحقیقات جاری تھیں،اس حوالے سے نیب حکام کا کہنا تھا کہ کیس میں تاخیری حربے استعمال کئےجارہے ہیں، شاہد خاقان عباسی پر وزارت پٹرولیم میں غیرقانونی بھرتیوں کا الزام ہے۔قومی احتساب بیورو کے مطابق دوران وزارت شاہد خاقان عباسی نے اختیارات کا ناجائزاستعمال کیا، انہوں نے وزارت پٹرولیم کے قوانین کی خلاف وزری کی۔اس کے علاوہ شاہد خاقان نے شیخ عمران الحق کو غیرقانونی طور پر ایم ڈی پی ایس او تعینات کیا، شیخ عمران الحق کو 50لاکھ روپے ماہانہ تنخواہ پر تعینات کیا گیا تھا حالانکہ ان کو محکمے کا تجربہ بھی نہیں تھا، ان کی تعیناتی قوانین سے ہٹ کر گئی۔اس سے قبل بھی نیب کی جانب سے ایل این جی اسکینڈل میں شاہد خاقان عباسی کو طلبی کا سمن جاری کیا گیا تھا جسے انہوں نے ہوا میں اڑا دیا، ان کو طلبی کے ساتھ نیب سوالات کے جوابات بھی ساتھ لانے کی ہدایت کی گئی تھی۔علاوہ ازیں ن لیگ نے شاہدخاقان عباسی کو دیئے گئے نیب کے سوالنامہ کی تفصیلات جاری کی تھیں، شاہد خاقان عباسی کو سات مختلف انکوائریز میں سوالنامے دیئے گئے، پہلی انکوائری بھاری تنخواہوں پرپی ایس او میں افسران کی بھرتیوں پر ہے۔دوسری انکوائری اینگرو ایل این جی ٹرمینل کے ساتھ معاہدوں سے متعلق ہے، تیسری انکوائری او جی ڈی سی ایل میں غیرقانونی بھرتیوں اور دیگرمعاملات پر ہے، چوتھی انکوائری او جی ڈی سی ایل میں غیرقانونی بھرتیوں سے متعلق ہے۔پانچویں انکوائری بلٹ پروف گاڑیوں کی غیر ضروری خریداری سے متعلق ہے، چھٹی انکوائری ایل این جی کے غیر قانونی ٹھیکے دینے سے متعلق ہے، ساتویں انکوائری قطر سے مہنگے داموں ایل این جی کی درآمد سے متعلق ہے۔انکوائریز میں شاہد خاقان عباسی سے136سوالوں کے تحریری جواب مانگے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ ن لیگ نے شاہد خاقان کے اثاثوں اور اکاؤنٹس کی تفصیلات بھی جاری کردیں ہیں۔