ایف بی آر نے پاکستانی تاجروں کو زبردست خوشی سنا دی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) نے 2018 کے ٹیکس ریٹرن جمع کرانے کی تاریخ میں توسیع کردی۔ایف بی آر کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی کا کہنا ہے کہ 2018 کے ٹیکس ریٹرن جمع کرانے کی تاریخ میں 2 اگست 2019 تک توسیع کی

گئی ہے۔انہوں نے لوگوں پر زور دیا کہ اس موقع سے فائدہ اٹھائیں اور مشکلات سے بچنے کے لیے اپنے ٹیکس گوشوارے بروقت جمع کرائیں۔ان کا کہنا ہے کہ انکم ٹیکس آرڈیننس کے مطابق ان افراد کے لیے ٹیکس گوشوارے جمع کرانا لازم ہے جو 500 گز سے زائد رقبے پر محیط مکان یا 1000 سی سی سے زیادہ کی گاڑی کے مالک ہیں۔چیئرمین ایف بی آر کے مطابق گیس اور بجلی کے تجارتی اور صنعتی صارفین کے لیے ٹیکس دہندگان کی فعال فہرست کا حصہ بننا ناگزیر ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ تاجر برادری کو مذاکرات کی میز پر بلائے اور ان کے جائز مطالبات حل کرے کیونکہ ملک کسی قسم کی انارکی ، تصادم یا عدم استحکام کا متحمل نہیں ہوسکتا۔ لاہور چیمبر کے قائم مقام صدر خواجہ شہزاد ناصر اور نائب صدر فہیم الرحمن سہگل نے کہا کہ حکومت ماں کی طرح ہوتی ہے، اسے تاجروں سے شفقت کا سلوک کرنا اور ان کی بات سنتے ہوئے مسائل حل کرنے چاہئیں جو کاروباری سرگرمیوں کو متاثر کررہے ہیں۔لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے عہدیداروں نے کہا کہ ملک تب تک معاشی ترقی کی راہ پر گامزن نہیں ہوسکتا جب تک حکومت اور تاجر برادری مل کر نہ چلیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت اسلام آباد ماڈل کی طرز پر اے بی سی ڈی کیٹگریز میں فکسڈ ٹیکس کی تجویز پر عمل درآمد کرے جو لاہور چیمبر نے دی تھی، ایکسپورٹ سے وابستہ سیکٹرز کے لیے زیر وریٹنگ کی سہولت کے خاتمے کے حوالے سے حکومت کو اس فیصلے پر نظر ثانی کرنی چاہیے۔