جج ارشد ملک کے سنائے گئے فیصلے برقراررہیں گےیا نہیں؟ اندر کی خبر آگئی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) قانون ماہرین کا کہنا ہے کہ جج ارشد ملک کے مختلف کیسز میں سنائے جانے والے فیصلے برقراررہیں گے.تفصیلات کے مطابق اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے سابق اٹارنی جنرل شاہ خاور نے کہا کہ جج ارشد ملک کی ویڈیو الگ اور کیسزمیں فیصلے بالکل الگ معاملہ ہے، وہ برقرار رہے ہیں.

ماہر قانون اظہرصدیق کا اس ضمن میں کہنا تھا کہ کہا ارشد ملک کے نیب سے ٹرانسفرسے کیس کی میرٹ پر فرق نہیں پڑے گا، البتہ مبینہ ویڈیو کی سازش کرنے والوں کےخلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے۔اسی تناظر میں بیرسٹرمسرورشاہ کا کہنا تھا کہ ارشد ملک نےبیان حلفی جمع کرا دیا، اب مریم نواز اوردیگر کا بیان حلفی طلب کیا جائے گا، ویڈیو آڈیو کا فرانزک کیا جائے گا.خیال رہے کہ ویڈیو اسکینڈل سامنے آنے کے بعد احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ، قائم مقام چیف جسٹس اسلام آبادہائی کورٹ نے کہا وزارت قانون جج ارشد ملک کی خدمات واپس لے لیں۔دوسری جانب جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل سپریم کورٹ آف پاکستان میں سماعت کے لیے مقرر ہوگیا ہے، چیف جسٹس کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ 16 جولائی کو اس کیس کی سماعت کرے گا. جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ عہدے سے ہٹائے جانے والے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کے خلاف شفاف تحقیقات کی جانی چاہیے تاہم انہیں صفائی کا موقع ملنا چاہیے۔سکھر میں پریس کانفرنس کے دوران بلاول بھٹو زرداری نے سوال کیا کہ ‘کیا یہ محض اتفاق ہے کہ یہی جج نواز شریف اور آصف زرداری کا کیس سنیں، اس سے لگتا ہے دال میں کچھ کالا ہے اور یہ عدلیہ کے لیے بہت نقصان دہ ہو سکتا ہے۔’انہوں نے کہا کہ آج اعلیٰ عدلیہ کے لیے چیلنجنگ وقت ہے، احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کے خلاف شفاف تحقیقات کی جانی چاہیے تاہم انہیں صفائی کا موقع ملنا چاہیے۔خیال رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے مبینہ طور پر متنازع ویڈیو سامنے آنے کے بعد احتساب عدالت نمبر 2 کے جج ارشد ملک کو ان کے عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا تھا۔ترجمان اسلام آباد ہائی کورٹ نے بتایا تھا کہ احتساب عدالت اسلام آباد کے جج ارشد ملک کو ہٹانے کے لیے وزارت قانون و انصاف کو خط لکھ دیا گیا۔