ویڈیو لیک اسکینڈل میں ایک اور تہلکہ۔۔۔ جج ارشد ملک کی جانب سے جمع کرائے گئے بیان حلفی میں ’ ناصر جنجوعہ ‘ نامی کردار کا تذکرہ مگر۔۔۔ یہ شخصیت کون نکلی؟ نیا پنڈورا باکس کھل گیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) نواز شریف کو سزا سنانے والے جج ارشد ملک نے اپنے بیان حلفی میں ناصر جنجوعہ نامی کردار کا تذکرہ کیا ہے جس کے بارے میں لوگوں نے یہ گمان کرنا شروع کردیا تھا کہ شاید یہ سابق مشیر قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل (ر) ناصر جنجوعہ ہیں حالانکہ

یہ ناصر جنجوعہ ایک الگ شخصیت ہے۔جج ارشد ملک کا ویڈیو سکینڈل سامنے آنے کے بعد سے پاکستان میں 2 عدد ناصر ہر زبان پر آگئے ہیں۔ پہلا ناصر بٹ ہے جس نے جج ارشد ملک کی ویڈیو بنائی جبکہ دوسرا ناصر جنجوعہ ہے جس نے مبینہ طور پر جج ارشد ملک کو رشوت کی پیشکش کی اور دھمکیاں دیں۔ناصر جنجوعہ کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ وہ ارب پتی کاروباری شخصیت اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کے معتمد خاص ہیں جوان کے ساتھ خصوصی جہاز میں سفر کرتے رہے ہیں۔ ناصر جنجوعہ مڈجیک کنسٹرکشن کمپنی کے مالک ہیں اور اسلام آباد کی طاقتور کاروباری شخصیت سمجھے جاتے ہیں۔ان کا نواز شریف کے ساتھ پچھلے دو تین سال سے گہرا تعلق رہا ہے اور کئی بار سابق وزیر اعظم کے ساتھ خفیہ ملاقاتیں کرتے تھے۔ ناصر جنجوعہ نہ صرف اسلام آباد میں بلکہ رائیونڈ میں جا کر بھی میاں نواز شریف کے ساتھ خفیہ طریقے سے اکیلے میں ملتے تھے۔ناصر جنجوعہ کی سوشل میڈیا پر بعض تصاویر بھی سامنے آئی ہیں جن میں انہیں جج ارشد ملک ویڈیو سکینڈل کے دوسرے کردار ناصر بٹ کے ساتھ بھی دیکھا گیا ہے۔ ان کی سابق چیئرمین نیب قمر الزمان چوہدری کے ساتھ تصویر بھی موجود ہے۔خیال رہے کہ جج ارشد ملک نے اپنے بیان حلفی میں ناصر جنجوعہ کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کے ساتھ ملاقات میں ناصر جنجوعہ نے انہیں رشوت کی پیشکش کی اور کہا کہ مستقبل محفوظ بنانے کا سنہری موقع ہے،ان کے پاس 10 کروڑ یورو فوری موجودہیں جبکہ 2 کروڑ یورو کار میں رکھے ہیں۔