میں غلطی پر تھا : کل تک تحریک انصاف کی حمایت کرنے والی مشہور روحانی شخصیت نے بھی عمران خان کا ساتھ چھوڑ دیا

سرگودھا (ویب ڈیسک) سابق رکن صوبائی اسمبلی صاحبزادہ غلام نظام الدین سیالوی نے پاکستان تحریک اںصاف کے لیے ووٹ مانگنے پر عوام سے معافی مانگ لی اور کہا ہے کہ یہ سب کچھ دباؤ میں آ کر کیا، جو ان کی بڑی غلطی تھی ، لیگی تھا، ہوں اور رہوں گا، ان کا کہنا تھا

کہ خواجہ حمید الدین سیالوی کی اجازت سے یہ فیصلہ کیا۔ نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے معروف روحانی شخصیت صاحبزادہ غلام نظام الدین سیالوی کا کہنا تھا کہ میں پہلے دن سے پی ٹی آئی کیساتھ اتفاق اس وجہ سے نہیں کررہا تھا ، مجھے یہی تھا کہ یہ ڈیلیو نہیں کر پائیں گے ، یہ کسی ایجنڈے کے تحت آرہے ہیں ، ہر طبقے کے اوپر ظلم کی کیفیت ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ میر ا خیال تھا کہ میری خاموشی بھی اس ظلم کا حصہ بن رہی ہے اور میں مزید ان کا ساتھ نہیں دے سکتا، میں پہلے ان کے بارے میں جو کہہ چکا ہوں، اس پر شرمندہ بھی ہوں اور عوام سے معافی مانگتا ہوں، سب سے پہلا مسئلہ تو یہ تھا کہ میرا ہی بھائی میری مرضی کے بغیر پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑ رہا تھا، فیملی اور بزرگوں کا فیصلہ سمجھیں جن کے حکم پر کیا لیکن اب مزید ساتھ نہیں چل سکتا ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ عوام کے پریشر کی وجہ سے ہی مجھے فیصلہ کرنا پڑا،عوام نے ہمیشہ اعتماد کیا حلقہ کے عوام کے پیار کو فراموش نہیں کر سکتا، الیکشن کے بعد خود کو سیاست سے الگ رکھا اب ضروری ہے اور حالات کا تقاضا ہے کہ محبت کرنیوالوں سے معذرت کر وں۔ دوسری جانب خبر کے مطابق معروف صحافی و تجزیہ کار روٴف کلاسرا نے وزیر اعظم عمران خان کو مشورہ دیا ہے کہ وہ چیئرمین سینیٹ کے معاملے سے اپنے آپ کو الگ تھلگ ہی رکھیں۔ کیونکہ اپوزیشن کا چیئرمین سینیٹ آ جانے سے کوئی آسمان نہیں گِر پڑے گا۔