کیا قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد بھی وزیراعظم بنیں گے ؟ صحافی کے سوال پر حامد میر نے ایسا جواب دیدیا کہ آپ یقین نہیں کریں گے

کراچی (ویب ڈیسک) سینئر صحافی حامد میر نے ایک فیس بک پیج کے لئے خصوصی انٹرویو دیا جس میں انہوں نے نہایت دلچسپ انداز میں سوالات کے جوابات دیئے جو کہ اس وقت سوشل میڈیا پر وائرل ہو چکا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق جب خاتون صحافی نے سینئر صحافی سے سوال کیا کہ

” کیا کپتان سرفراز وزیراعظم بنیں گے ؟ جس پر حامد میر نے لمبی سانس لی اور مسکراتے ہوئے چہرے کے ساتھ کہا کہ ” میں اس کی تردید کرنے سے قاصر ہوں کیونکہ پاکستان میں کچھ بھی ہو سکتا ہے ۔“خاتون صحافی نے ایک سوال کرتے ہوئے کہا کہ جب 1992 کا ورلڈ کپ جیتا تو آپ کہاں تھے ؟ حامد میر نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ” میں تو جناب پاگل تھا ، میں نے بہت دعائیں مانگیں ، عمران خان نے اس سے پہلے ریٹائرمنٹ کا اعلان کر دیا تھا اور میں بھی ان لوگوں میں شامل تھا جنہوں نے ان سے ریٹائرمنٹ واپس کروائی تھی ، بڑی لڑائی کی تھی ان کے ساتھ ، عمران خان اس وقت شوکت خانم پراجیکٹ شروع کر چکے تھے ، ہمار ا یہ خیال تھا کہ وہ بہت اچھے انسان ہیں ، وہ ورلڈ کپ جیت جائیں پھر ہم ان کے ساتھ مل کر شوکت خانم ہسپتال بنائیں گے اور پھر یہ سوشل سروس کا کام کریں گے لیکن ہمیں کیا پتا تھا کہ وہ وزیراعظم بن جائیں گے اور ہمارے اوپر پابندیاں لگا دیں گے ۔ دوسری جانب خبر کے مطابق معروف صحافی و تجزیہ کار روٴف کلاسرا نے وزیر اعظم عمران خان کو مشورہ دیا ہے کہ وہ چیئرمین سینیٹ کے معاملے سے اپنے آپ کو الگ تھلگ ہی رکھیں۔ کیونکہ اپوزیشن کا چیئرمین سینیٹ آ جانے سے کوئی آسمان نہیں گِر پڑے گا۔ بلکہ یہ عمران خان کے لیے اچھا شگون ہو گا۔ کیونکہ آپ کو اچھی اپوزیشن مِلنی چاہیے۔ آپ کا دُشمن آپ کا مخالف ہی آپ کو اچھی زندگی گزارنے پر مجبور کرتے ہیں۔ جتنے طاقتور آپ کے دُشمن ہوتے ہیں اُتنا ہی اچھا آپ پرفارم کرتے ہیں۔ ڈسپلن میں رہتے ہیں، غلطیاں کم کرتے ہیں۔ اگر یہ کہیں کہ سڑکیں سُنسان ہو جائیں اور بیچ میں مرزا یار پھِرے۔