کامیاب ہوگئے تو ٹھیک ورنہ ۔۔۔۔ چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی کا مضحکہ خیز بیان سامنے آ گیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) فیڈرل بورڈ آف ریونیوکے چیئر مین شبر زیدی کا کہنا ہے کہ ہمیں ڈیڈلاک پیدا کرنا نہیں مسائل طریقے سے حل کرنے ہیں، اپنی کوشش میں کامیاب ہوگئے تو ٹھیک ورنہ اللہ مالک ہے۔ میڈیا سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ بے نامی جائیدادوں کے معاملے

پر مسائل بہت گہرے ہیں، آگے کوئی پس پردہ کوئی اور ہے، ہم سب معاملات سمجھتے ہیں۔ سیّد شبر زیدی کا مزید کہنا تھا کہ ٹیکسٹائل کی کوئی بھی انڈسٹری بند نہیں ہے۔ تاجر کہتے ہیں شناختی کارڈ کی شرط ختم کردیں تو باقی سب مان لیں گے۔ چیئر مین ایف بی آر نے کہا کہ مینوفیکچررزکی درآمدی خام مال پرایگزیمپشن سرٹیفکیٹ کا خود کارنظام کا منصوبہ بنا لیا، متعلقہ کمشنر7دن میں سرٹیفکیٹ کا فیصلہ نہیں کرپاتا توپبلک لمیٹڈ کمپنی کوخود کارنظام سرٹیفکیٹ جاری کردے گا،اسی طرح پرائیوٹ لمیٹڈ کمپنی کو یہ نظام 10 دن میں سرٹیفکیٹ جاری کرے گا،یہی نظام باقی افراد کو 15 دن میں سرٹیفکیٹ جاری کرے گا۔ دوسری جانب خبر کے مطابق اسٹیٹ بینک نے وزیر اعظم کی جانب سے نوجوانوں کو چھوٹے کاروبار کے لیے آسان شرائط پر بلا سود قرضوں کی فراہمی کے پروگرام ” پرائم منسٹر کامیاب جوان ایس ایم ای لینڈنگ پروگرام“ کے تحت قرضے کے حصول کا طریقہ کار جاری کردیا۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق قرضے کے لیے درخواست فارم نیشنل بینک، بینک آف پنجاب اور بینک آف خیبر کی شاخوں اور ویب سائٹس سے حاصل کیے جا سکتے ہیں۔ بینکوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ درخواست فارم پر اپنے ٹول فری نمبر بھی درج کریں تاکہ اپنا کاروبار کرنے والے نوجوانوں کی رہنمائی کی جاسکے۔درخواست فارمز کا اجراء وزیر اعظم کی جانب سے پروگرام کے باضابطہ افتتاح کے فوری بعد شروع کردیا جائے گا۔ اس پروگرام کے تحت نوجوان اپنے کاروبار کے لیے بینکوں سے ایک لاکھ سے 50 لاکھ تک کے قرضے حاصل کرسکتے ہیں جن پر سود حکومت ادا کرے گی اور قرضہ پر نقصانات پر زر تلافی کا بوجھ بھی خود حکومت اٹھائے گی۔