بریکنگ نیوز : راتوں رات معجزہ ۔۔۔۔ پاکستان کے خزانے میں ڈالروں کی برسات ، ایک ہی بار کتنی خطیر رقم اور کہاں سے آ گئی ؟ جانیے

اسلام آباد(ویب ڈیسک) بین الاقوامی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف) سے پاکستان کو99 کروڑ14 لاکھ ڈالر کی پہلی قسط موصول ہوگئی۔ ترجمان اسٹیٹ بینک کے مطابق آئی ایم ایف سے ملنے والی رقم اسٹیٹ بینک میں حکومت پاکستان کے اکائونٹ میں منتقل ہوگئی اور پہلی قسط کی مالیت اسپیشل ڈرائنگ رائٹس(ایس ڈی آر) کی شکل میں716 ملین ڈالر بنتی ہے۔

دوسری جانب ایک خبر کے مطابق چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو شبر زیدی نے کہا ہے کہ تاجر برادری کی جانب سے ہڑتال کرنے کا کوئی جواز نہیں ، فرنٹ پر کوئی اوربیک پر کوئی اور ہے،اگر معاملات حل نہیں ہوئے تواللہ مالک ہے لیکن تاجر برادری کے ساتھ معاملات کو بہتر طریقے سے حل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ، حکومت کی جانب سے شناختی کارڈ کی شرط ختم نہیں کی جا سکتی،ریفنڈ کا نیانظام لارہے ہیں،پاکستان کو چیلنجز کا سامنا، ڈیڈ لاک پیدا کرنانہیں چاہتے ، مسائل طریقے سے ہینڈل کرینگے،ٹیکسٹائل کی کوئی انڈسٹری بند نہیں، آٹے اور میدےپر ٹیکس نہیں لگایا ۔ تفصیلات کے مطابق جمعرات کو چیئر مین ایف بی آر شبر زیدی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تاجر برادری کی جانب سے پڑتال کا کوئی جواز نہیں ، پاکستان کو بہت سے چیلنجز کا سامناہے جبکہ ہمیں کوئی ڈیڈ لاک نہیں پیداکرنا ، مسائل کو طریقے سے ہینڈل کرنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مینو فیکچررز کی درآمدی خام مال پرایگزیمیشن سر ٹیفکیٹ کا خود کار نظام کا منصوبہ تیار کر لیا گیا ہے ۔ چیئر مین ایف بی آر نے مزید کہا کہ ٹیکسٹائل کی کوئی انڈسٹری بند نہیں ہے جبکہ مسائل کی گہرائی بہت زیادہ ہے اور فرنٹ پر کوئی اوربیک پر کوئی اور ہے، ہم سمجھتے ہیں کہ کیا معاملات ہیں ، تاجر کہتے ہیں کہ شناختی کارڈ کی شرط ختم کریں تو باقی سب مان جائیں گے لیکن حکومت شناختی کارڈ کی شرط ختم نہیں کر سکتی ۔انہوں نے کہا کہ بے نامی جائیدادیں رکھنے والوں کے خلاف سیکشن114کے تحت نوٹسز جاری کرنے کا آغاز کر دیا ہے اور پہلے بھی لوگوں کو بے نامی جائیدادیں ظاہر کرنے کے حوالے سے آگاہ کیا گیا تھا اور بہت وقت بھی دیا گیا ہے ۔دوسری جانب چیئر مین ایف بی آر شبر زیدی نے کہا ہے کہ آٹا اور میدہ پر کوئی ٹیکس عائد نہیں کیا گیا ۔ ایک بیان میں چیئرمین ایف بی آرنے کہاکہ اس حوالے سے میڈیا پر چلنے والی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ۔