نندی پاور پراجیکٹ کیس : احتساب عدالت نے ڈاکٹر بابر اعوان کی قسمت کا فیصلہ سنا دیا

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک) نندی پور پاور پراجیکٹ کیس میں احتساب عدالت نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنماء بابر اعوان کو بری کر دیا ہے، جسٹس ریٹائرڈ کیانی بھی ریفرنس سے بری جبکہ پیپلز پارٹی کے رہنماء راجہ پرویز اشرف ،شمائلہ محمود اور ڈاکٹر ریاض محمود کی بریت کی درخواستوں کو مسترد کر دیا گیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں نندی پور پاور پراجیکٹ میں تاخیر سے متعلق ریفرنس پر سماعت ہوئی، جس میں بابراعوان سمیت 5 ملزمان کی بریت کی درخواست پر فیصلہ سنا دیا گیا ہے ۔ فیصلے کے مطابق تحریک انصاف کے رہنماء بابر اعوان کو بری کر دیا ہے، جسٹس ریٹائرڈ کیانی بھی ریفرنس سے بری جبکہ پیپلز پارٹی کے رہنماء راجہ پرویز اشرف ،شمائلہ محمود اور ڈاکٹر ریاض محمود کی بریت کی درخواستوں کو مسترد کر دیا گیا ہے۔احتساب عدالت کے جج محمد ارشد ملک بریت کی درخواستوں پر فیصلہ سنایا، خیال ہے کہ گزشتہ روز احتساب عدالت میں نندی پور پاور پروجیکٹ ریفرنس کی سماعت جج محمد ارشد ملک نے کی تھی، دوران سماعت جج ارشد ملک نے استفسار کیا کہ نندی پور پاور پروجکیٹ ریفرنس میں کتنے ملزمان ہیں؟، ملزمان کے خلاف کیا الزام ہے مختصر بتا دیں،کیا ملزمان پر کرپشن اور رشوت کا الزام ہے؟ پھر ملزمان پر کیا الزام ہے بتا دیں۔جس پر نیب پراسیکیوٹر عثمان مسعود ملزمان کی بریت کی درخواستوں کے خلاف د لائل دیتے ہوئے کہا تھا کہ سات ملزمان ہیں بریت کی پانچ درخواستیں دائر ہوئی ہیں،کیس میں چار گواہان کے بیانات قلمبند ہوچکے ہیں۔نیب پراسیکیوٹر نے کہا تھا کسی بھی ملزم کے خلاف کرپشن اور رشوت لینے کا الزام نہیں ہے، ملزمان پر بددہانتی کا الزام ہے، وزیر اعظم کابینہ کے احکامات کے باوجود پراجیکٹ میں تاخیر کی گئی،پراجیکٹ میں تاخیر سے27بلین کا نقصان ہوا۔وکیل راجا پرویز اشرف کا کہنا تھا کہ نندی پور پاور پراجیکٹ سے 425 میگا واٹ بجلی پیدا ہونی تھی،آج تک نندی پور پاور پلانٹ سے کوئی بجلی پیدا نہیں ہوئی، نندی پور پاور پراجیکٹ میں تاخیر کے حوا لے سے ایک ریفرنس لاہور میں بھی زیر التوا ہے،2014سے انکوائری شروع ہوئی تو 2017 تک نیب نے کیا کیا، نیب نے جان بوجھ کر مناسب وقت کا انتظار کر کے ریفرنس فائل کیا۔ملزمان کی بریت کی درخواستوں پر دلائل مکمل ہونے کے بعد احتساب عدالت نے پانچ ملزمان کی بریت کی درخواستوں پر فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔یاد رہے نیب کے مطابق پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں وزراء کی ملی بھگت سے نندی پور پاور پراجیکٹ منصوبے میں 2 سال کی تاخیرہونے سے قومی خزانے کو 27 ارب کا نقصان پہنچا تھا۔نندی پور پاور پراجیکٹ کیس میں سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف، سابق وزیرقانون بابراعوان، سابق سیکریٹری قانون اور دیگر پر فرد جرم عائد ہوچکی ہے۔واضح رہے کہ نیب ریفرنس میں عائد الزامات پر بابراعوان وزیراعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور کے عہدے سے مستعفی ہوگئے تھے۔