اسے کہتے ہیں سبق سیکھانا : چیئرمین نیب کی ویڈیو چلانے والے نجی چینل کو عبرتناک سزا دے دی گئی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) نے 23؍ مئی 2019ء کو چیئرمین نیب کی کردار کشی پر مبنی مواد نشر کرنے اور ادارے کی ساکھ کو نقصان پہنچانے پر نجی چینل پر دس لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا ہے۔ غیرتصدیق شدہ مواد نشر کرنا پیمرا ترمیمی ایکٹ کی مختلف

شقوں کی خلاف ورزی ہے۔ نیوز ون میسرز ایئر ویوز میڈیا پرائیویٹ لمیٹڈ پیمرا کو شخصی سماعت اور نوٹس کے تحریری جواب میں اطمینان بخش جواب دینے میں ناکام رہا ہے۔ اس کے علاوہ چینل چیئرمین نیب کی کردار کشی اور ادارے کی ساکھ کو نقصان پہنچانےکے حوالے سے نشر کئے گئے مواد کے بارے میں تسلی بخش جواب نہیں دے سکا جو کہ پیمرا قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی ہے جس کے باعث مذکورہ چینل کو دس لاکھ روپے جرمانہ کیا گیا ہے، جرمانہ کی عدم ادائیگی کی صورت میں سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔ دوسری جانب یہ خبر ہے کہ قومی احتساب بیورو نے نیوز ون ٹی وی پر چیئر مین نیب کے حوالے سے نشر ہونے والی خبر کی سختی سے تردید کرتے ہوئے اسے حقائق کے منافی، من گھڑت، بے بنیاد اور جھوٹ پر مبنی پراپیگنڈہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ایک بلیک میلرز کا گروپ ہے۔جس کا مقصد نیب اور چیئر مین نیب کی ساکھ کو مجروع کرنا مقصود ہے نیب نے تمام دباؤ اور بلیک میلنگ کو پش پشت رکھتے ہوئے اس بلیک میلر گروہ کے دو افراد کو نہ صرف گرفتار کیا ہے بلکہ ریفرنس کی بھی منظوری دے دی گئی ہے۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ اس بلیک میلر گروپ کے خلاف ملک کے مختلف حصوں میں 42 ایف آئی آر درج ہیں جن میں بلیک میلنگ، اغواہ برائے تعاون، عوام کو بڑے پیمانے پر لوٹنے اور نیب اور ایف آئی اے کے جعلی افر بن کر سرکاری اور پرائیویٹ افراد کو بلیک میل کر کے کروڑوں روپے لوٹنے کے ثبوت نیب کے پاس موجود ہیں ۔