ڈیم کے جو پیسے بینک میں اکٹھے ہوئے ہیں انھیں فوری اس کام پر لگاؤ ۔۔۔ سپریم کورٹ نے دبنگ حکم دے دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سپریم کورٹ نے ڈیمز فنڈ میں موجود رقم کی سرمایہ کاری کا فیصلہ کیا ہے، عدالت نے اسٹیٹ بنک کو فنڈ میں موجود 10 ارب 60 کروڑ روپے نیشنل بنک کو منتقل کرنے کا حکم دیا ہے۔ عدالت کے مطابق 19 جون کو ٹی بلز کی نئی بولی کے

بعد منافع کی شرح کا اعلان ہوگا، نیشنل بنک سپریم کورٹ کی جانب سے بولی میں حصہ لے گا جب کہ طے شدہ شرح منافع پر ڈیمز فنڈ کی ٹی بلز میں 3 ماہ کے لیے سرمایہ کاری ہوگی۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے حکم جاری ہونے کے بعد وفاقی حکومت نے دو ڈیمز دیامیربھاشا اورمہمند کی تعمیرکے لیے فنڈز قائم کیے تھے جس میں پاک فوج، سرکاری ملازمین، قومی کھلاڑیوں، اداکاروں اور سماجی شخصیات سمیت عام افراد نے پیسے جمع کرائے تھے، یاد رہے کہ یہ خبر ائی تھی کہمعروف صحافی نجم سیٹھی نے ڈیم فنڈ میں گھپلوں کا انکشاف کر دیا۔نجم سیٹھی کا دورانِ پروگرام گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا جو کہہ رہے ہہیں اس بات میں وزن آ گیا ہے۔کیونکہ فنڈ ریزنگ میں کچھ لوگ کیش اور کچھ لوگ چیک بھی دیتے ہیں۔اب ڈیم فنڈ میں دس کروڑ روپے کا فرق نکل آیا ہے جو قریباََ 15 یا 16 فیصد بنتا ہے،لیکن اب سوال یہ ہے کہ گورنر سندھ سے پوچھا جانا چاہیے کہ 15 فیصد پیسے کہاں گئے۔ ہوسکتا ہے گورنر صاحب کہیں گے کہ تقریب پر پیسہ خرچ ہوا تھا جو ہم نے گورنر ہاؤس کے فنڈسے نہیں دیا لیکن بحر حال اس بات کا جواب دینا تو ہو گا،کیونکہ جب وزیراعظم یہ بیان دے رہے ہیں کہ ہم نے ڈیم فنڈ میں اتنے پیسے اکھٹے کیے ہیں تو اس کے بعد دس کروڑ روپے کا ِدھر اُدھر ہو جانا کوئی چھوٹی بات نہیں۔ اور اب یہ خبر آئی ہے۔