بھارتی ائیر فورس کا طیارہ تباہ۔۔۔ بڑی تعداد میں ہلاکتیں

نئی دہلی (نیوز ڈیسک) بھارتی حکام کو اپنے اس طیارے کے ملبے کا سراغ مل گیا ہے جو 3 جون سے لاپتا تھا۔فوجی طیارہ 3 جون کو اس وقت راڈار سے غائب ہو گیا تھا جب وہ ملک کی شمال مشرقی ریاست اروناچل پردیش کے اوپر محو پرواز تھا۔ اس طیارے پر بھارتی

ایئرفورس کے 13 اہلکار سوار تھے۔ 3 جون کو لاپتہ ہونے والے بھارتی فضائیہ کے طیارے سے متعلق اہم خبر سامنے آئی ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ 8 رکنی ریسکیو ٹیم ارونا چل پردیش میں طیارے کے ملبے تک پہنچ گئی ہیں۔طیارے میں سوار پاک فضائیہ کے اہلکاروں سمیت کوئی بھی زندہ نہ بچا۔ طیارے میں عملے کے 8 ارکان سمیت 13 افراد سوار تھے۔۔یاد رہے کہ بھارتی فضائیہ کا ٹرانسپورٹ طیارہ بھارتی شہر آسام میں موجود ائیربیس سے پرواز بھرنے کے بعد لاپتہ ہو گیا تھا۔طیارے سے آخری رابطہ آج دوپہر ایک بجے کے قریب ہوا تھا۔بھارتی میڈیا کے مطابق طیارے میں 13 مسافر سوار تھے جن میں 5 مسافر اور 8 کریو ممبرز شامل تھے۔ بھارتی فضائیہ نے گمشدہ طیارے کا سراغ لگانے کے لیے اپنے تمام تر وسائل کو بروئے کار لانے کا فیصلہ کیا تھا۔ خیال رہے کہ اس سے قبل بھارتی فضائیہ کا 1986ء میں بحیرہ عرب میں اے این 32 لا پتہ ہوا تھا جو سوویت یونین سے عمان کے راستے واپس آ رہا تھا ،اس طیارے کا کوئی سراغ یا ملبہ بھارت کو نہیں ملا۔بھارت کا ایک اور اے این 32 طیارہ 2016 میں لاپتہ ہوا تھا جس میں بھارتی فضائیہ کے 29 اہلکار سوار تھے۔ کافی تلاش کے بعد بھی بھارت کو اس طیارے کے بارے میں کچھ معلوم نہیں ہو سکا تھا۔ بھارتی فضائیہ کے اب تک دو اے این 32 طیارے گر کر تباہ ہوئے۔ ایک طیارہ 1989ء اور دوسرا 2009ء میں گر کر تباہ ہوا تھا۔ بھارت کے پاس اے این 32 طیاروں کی تعداد ایک سو سے زائد ہے ، بھارت نے یہ طیارے سوویت یونین سے خریدے تھے ،اے این 32 طیارے یوکرین میں بنائے گئے ہیں۔