مسائل حد سے بڑھ گئے : اپوزیشن کے بعد اتحادی جماعتیں بھی ایکٹیو ہوگئیں ۔۔ عمران خان سے ہنگامی ملاقات متوقع

اسلام آباد(ویب ڈیسک) مسلم لیگ ق، ایم کیو ایم، جی ڈی اے اور بلوچستان عوامی پارٹی نے مشترکہ طور پر وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کا فیصلہ کر لیا۔مسلم لیگ قائداعظم کے صدر چودھری شجاعت حسین کی اسلام آباد رہائشگاہ پر چار اتحادی جماعتوں کے رہنماؤں کی مشاورتی بیٹھک ہوئی جس

میں مسلم لیگ ق، ایم کیو ایم، بلوچستان عوامی پارٹی اور جی ڈی اے کی پارلیمانی لیڈرشپ شریک ہوئی۔چاروں جماعتوں کے تقریباً 20 رہنما، پارلیمانی لیڈر اور ارکان پارلیمنٹ اجلاس میں شریک ہوئے اور وزیراعظم عمران خان سے مشترکہ ملاقات کا فیصلہ کیا۔ذرائع کے مطابق چاروں جماعتوں کی قیادت وزیراعظم سے ملاقات میں انھیں حکومتی سطح پر مسائل، اپنے صوبوں میں پائی جانے والی صورتحال اور دیگر امور پر بھی آگاہ کریں گے۔چاروں اتحادیوں کا کہنا تھا کہ آج کی بیٹھک کا مقصد حکومت کےخلاف کوئی محاذ بنانا نہیں ہے۔ چاروں جماعتوں کا پہلا مشترکہ اجلاس ہوا، آئندہ بھی مل کر حکمت عملی طے کی جائے گی۔ دوسری جانب یہ خبر ہے کہ پنجاب کے نئے مالی سال کے بجٹ کو حتمی شکل دے دی گئی ہے،جس میں 350 ارب روپے ترقیاتی منصوبوں کے لیے رکھے گئے ہیں جبکہ غیر ترقیاتی بجٹ کا حجم 2 ہزار 2 سو ارب روپے رکھا گیا ہے۔نئے بجٹ میں میگا پروجیکٹس کو پبلک، پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت مکمل کرنے کی تجوی۔ز دی گئی ہے، اس مقصد کیلئے متعلقہ قوانین میں ترامیم کی جائیں گی۔حکومتِ پنجاب نے صوبے کے مالی سال 2020ء -2019ء کے بجٹ کو حتمی شکل دے دی ہے، 14 جون کو پنجاب اسمبلی میں بجٹ پیش کرنے سے قبل کابینہ سے اس کی منظوری لی جائے گی۔محکمہ خزانہ پنجاب نئے مالی سال کے بجٹ کو ٹیکس فری اور 200 ارب کا سرپلس بجٹ قرار دے رہا ہے، جس میں 350 ارب روپے ترقیاتی منصوبوں کیلئے جبکہ غیر ترقیاتی بجٹ کا حجم 2 ہزار 2 سو ارب روپے رکھا گیا ہے۔