انکم ٹیکس کی چھوٹ 12لاکھ روپے سالانہ سے کم کر دی گئی، اب کتنی رعایت ملے گی ؟ تازہ ترین خبر

اسلام آباد (ویب ڈیسک) حکومت نے ایف بی آر کو 5ہزار 5سو ارب روپے حاصل کرنے کا بلند ترین حدف دے دیا اور انکم ٹیکس کی چھوٹ 12لاکھ سالانہ سے 6لاکھ روپے لانے کی تجویز دے دی تفصیلات کے مطابق آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ٹیکس حدف میں ریکارڈ اضافہ ہونے والا ہے

ٹیکس حد ف میں 1ہزار 400ارب روپے کا حدف ہے جو کہ ایف بی آر کو اگلے 5سال میں 31فیصد سے زیادہ ٹیکس جمع کرنے کا حدف دیا گیا ہے اس کے علاوہ انکم ٹیکس کی مد میں سخت تجاویز دے کر مزید 150ارب روپے وصول کیے جائیں گے اور انکم ٹیکس کی چھوٹ نے 12لاکھ سالانہ سے 6لاکھ روپے لانے کی بھی تجویز دی گئی ہے جس سے انکم ٹیکس چھوٹ ختم ہونے پر 90ارب روپے اضافے ٹیکس وصول ہوگا۔ یاد رہے کہ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر احمد حسن مغل نے کہا کہ صنعتی شعبہ اپنی مصنوعات تیار کرنے کیلئے بہت سا خام مال باہر سے درآمد کرتا ہے لیکن روپے کی قدر بہت زیادہ گر گئی ہے جس وجہ سے خام مال کی درآمد مزید مہنگی ہوگئی ہے اور پیداواری لاگت میں کافی اضافہ ہو گیا ہے لہذا انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ آئندہ بجٹ میں صنعتی خام مال کی درآمد پر عائد ڈیوٹی میں واضع کمی کرے تا کہ صنعتی شعبے کی پیداواری لاگت کم ہو جس سے ہماری مصنوعات سستی تیار ہوں گی اور برآمدات کو بہتر فروغ ملے گا۔انہوں نے کہا کہ حکومت ریونیو کو بہتر کرنے کے لئے آئندہ بجٹ میں تقریبا 1900اشیاء پر ریگولیٹری ڈیوٹی کو مزید بڑھانے پر غور کر رہی ہے تاہم انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ صنعتی مال کی درآمد پر ڈیوٹی میں مزید کوئی اضافہ نہ کیا جائے بلکہ ڈیوٹی میں کمی کی جائے جس سے مصنوعات کی تیاری کی لاگت کم ہو گی اور صنعتی سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا۔