پاکستان کی جیل کے قوانین میں بالآخر ڈیڈھ صدی بعد بڑی تبدیلی کر دی گئی ۔۔ یہ تبدیلی کیا ہے ؟

کراچی(ویب ڈیسک) سندھ اسمبلی نے جیل اصلاحات میں تبدیلی کا بل تیار کرلیا جس کے تحت اب جیل کو عقوبت خانے کے بجائے اصلاحی گھر کی حثیثیت حاصل ہوجائے گی۔تفصیلات کے مطابق مشیر اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ سندھ وہ پہلا صو بہ ہے جہاں جیل کو اصلا ح گھر

بنا نے کےلئے قا نو ن سازی کی گئی۔ اُن کا کہنا تھا کہ کسی بھی شخص کو جیل بھیجنے کا مقصد اُس کی اصلاح ہے کیونکہ یہ عقوبت خانہ نہیں ہے۔ان کا کہنا تھا کہ جیل اصلاحات کا قانون بہتری کی طرف مثبت قدم ہے، نئے قوانین کی تیا ر ی کےلئے اپوزیشن نے بھر پو رمعاونت کی، اس ضمن میں فردوس شمیم نقوی اور جاوید حنیف خان نے بھرپور ساتھ دیا۔مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ اس ایکٹ میں قیدیوں کی عزت نفس اور معاشرتی پہلوو ں کو مد نظر رکھا گیا اور انہیں امتیازی حیثیت دی گئی ہے تا کہ جیل سے آزا د ہو کر قیدی با عزت شہر ی بن سکیں اور معا شر ے میں اپنا مثبت کر دار ادا کر سکیں ۔ بیرسٹر مر تضی وہا ب نے کہا کہ یہ بل بھی سندھ اسمبلی میں پیش ہو نے جا رہا ہے ا س بل سے قیدیو ں کی اصلا ح کےلئے سندھ اسمبلی کو قا نو ن ساز اسمبلی کہنے کا اعزا ز بھی حا صل ہو گا انہو ں نے بتا یا کہ سندھ پرزنز اینڈ کریکشن سروس ایکٹ 2019 کو اصلاحی بل سے موسوم کیا جاسکتا ہے ۔دوسری جانب سندھ اسمبلی کا اجلاس ایک بار پھر شور شرابہ اور ہنگامہ آرئی کی نظر ہوگیا، پی ٹی آئی کے ارکان نے اسپیکر ڈائس کا گھیراؤ کیا اور دھرنا دیا، اپوزیشن ارکان ایڈز کے معاملے پر بات کرنے کی اجازت نہ ملنے پر برہم ہوئے۔اپوزیشن اور حکومتی اراکین میں تلخ کلامی بھی ہوئی۔