’’ آج آپ کو آخری بار دستیاب ہوں، اب یا نیب رہے گا یا ۔۔۔ ‘‘ آصف زرداری کی نیب میں پیشی، نیب حکام کو کیا کہتے رہے؟ تہلکہ خیز انکشافات

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) جعلی اکاؤنٹس کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری کی پیشی کی اندرونی کہانی سامنے آگئی۔نجی ٹی وی دنیا نیوز نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا کہ نیب ٹیم سے مکالمہ کرتے ہوئے سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا کہ آج آپ کو آخری بار دستیاب

ہوں، اب نیب نہیں ہوگا، نیب رہے گا یا پاکستان کی معیشت۔ آصف زرداری نے کہا کہ ہر ایک کے پاس بلیک منی اور بزنس اکاؤنٹس ہیں۔نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق صدر آصف زرداری پیشی کے موقع پر جعلی اکاؤنٹس کوبزنس اکاؤنٹس قراردیتے رہے۔ پیشی پر آصف زرداری شدید غصے میں تھے۔نیب کی جانب سے سابق صدر کو انکوائریز میں سوالنامہ دیا گیا ہے ، نیب نے آصف زرداری کو 23 مئی کو دوبارہ طلب کر لیا ہے ، انہیں سوالنامے کے جوابات ساتھ لانے کی ہدایت بھی کی گئی ہے۔خیال رہے کہ جعلی اکاﺅنٹس کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری جمعرات کو نیب آفس اسلام آبادمیں پیش ہوئے ، جہاں انہوں نے 8ارب روپے کی مشکوک ٹرانزیکشن اور اوپل منصوبہ انکوائری میں اپنا بیان قلمبند کرایا۔ خیال رہے کہ اس سے قبل سینئر صحافی ، کالم نگار ،اینکر پرسن جاوید چوہدری نے پرسوں چیئرمین نیب جاوید اقبال سے ملاقات کی ،ملاقات کے دوران چیئرمین نیب نے کہا کہ ہم نے سندھ میں بھی کسی کرپٹ کو نہیں چھوڑا‘ سندھ میں حکومت اور بیورو کریسی ہمارے ساتھ تعاون نہیں کر رہی تھی۔سپریم کورٹ نے حکم دیا اور آصف علی زرداری اور فریال تالپور کے مقدمے راولپنڈی اور اسلام آباد شفٹ ہو گئے‘ یہ ضمانت پر ہیں‘ جس دن ضمانت منسوخ ہو گی یہ دونوں بھی گرفتار ہو جائیں گے‘ ریفرنس بہت پکے اور ٹھوس ہیں بس چند دن کی بات ہے“ وہ رکے اور بولے ”آصف علی زرداری جس دن انکوائری کےلئے پیش ہوئے تھے ان کی ٹانگیں اور ہاتھ لرز رہے تھے‘ انہوں نے گرین ٹی کا کپ مانگا‘ ہمارے افسر نے پیش کر دیا‘ آصف علی زرداری نے کپ اٹھایا لیکن کپ ان کے ہاتھ میں لرز رہا تھا۔وہ اپنا دوسرا ہاتھ کپ کے نیچے رکھنے پر مجبور ہو گئے‘ وہ بڑی مشکل سے دونوں ہاتھوں کے ساتھ گرین ٹی کا کپ ختم کر پائے۔